فرانس، اٹلی، سپین ؛ کورونا کیسز دوبارہ سے سراٹھانے لگے، حکومتیں پریشان

پیرس (کشمیر لنک نیوز) فرانس سمیت چند یورپی ممالک میں کورونا کیسز میں اضافے نے انتظامیہ کو نئی سوچ میں مبتلا کردیا ہے، لاک ڈائون کے متعدد فیز مکمل کرنے کے باوجود حکومتیں ایسے نتائج کیلئے پرامید نہ تھیں۔
کورونا وائرس کے تیزی سے دوبارہ پھیلاؤ پر مختلف آرا سامنے آر ہی ہیں فرانس میں کورونا وائرس کے مزید 7 ہزار 379 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ گزشتہ روز 6 ہزار 111 متاثرین سامنے آئے تھے۔

فرانس میں اس سے قبل 31 مارچ کو سب سے زیادہ 7 ہزار 578 کیسز رپورٹ ہوئے جو ایک دن میں سامنے آنے والے سب سے زیادہ کیسز تھے۔ نئے کیسز کے بعد فرانس میں کورونا متاثرین کی مجموعی تعداد بڑھ کر 2 لاکھ 67 ہزار 77 ہوگئی ہے۔
اسی طرح مزید 20 افراد کی اموات کے بعد مجموعی اموات کی تعداد 30 ہزار 596 ہو گئی ہے۔
فرانس کے علاوہ اٹلی اور اسپین میں کورونا وائرس کے کیسز میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔ کورونا وائرس کے باعث ان ممالک کی معیشت بھی بری طرح متاثر ہوئی ہے۔
صورتحال کو دیکھتے ہوئے ماہرین کا کہنا ہےکہ یورپ میں سیاحوں کی آمد میں حالیہ اضافےکے باعث کورونا کیسز بڑھتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں۔ دوسری طرف تعلیمی اداروں کے دوبارہ سے کھلنے کا وقت بھی ہوگیا ہے جو حکومتوں کیلئے زیادہ پریشانی کا باعث ہے۔
حکومت برطانیہ جس نے ان تین ممالک کی ابتدائی کورونا پیش بندی سے بہت کچھ سیکھا ایک بار پھر ان ممالک کی نئی حکمت عملی کیطرف متوجہ ہے کیونکہ لمبے لاک ڈائون کے بعد برطانیہ میں سکول کھلنے میں اب چند روز ہی باقی ہیں۔ واضع رہے کورونا کے نئے کیسز اور اموات کے حوالے سے برطانیہ بہتر پوزیشن میں ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes