غم حسین علیہ السلام ہے جو ہمارے دلوں کی حرارت اور زندگی بخشتا ہے؛ مقررین

راچڈیل (محمد فیاض بشیر) دس محرم الحرام کی شب عباس مہدی کی رہائش گاہ پر شام غریباں کا خصوصی اہتمام کیا گیا جس میں عزرداروں نے شرکت کے غم حسین علیہ السلام کا ماتم کیا اور عالم اقوام کو امن محبت اتحاد و اتفاق کے ساتھ حق و سچ کی فتح کا پیغام دیا۔
بین الاقوامی شہرت کے حامل ذاکر سبطین کاظمی نے خصوصی شرکت کرتے ہوئے کہا پوری دنیا میں عزرداری امن و امان محبت اتحاد و اتفاق کے پیغام کو عام کرنے کے طور پر منائی گئی، ان کا مذید کہنا تھا کہ شام غریباں میں لٹا ہوا قافلہ باقی قربانیاں دے کر اسلام کے ساتھ انسانیت کی عظمت ماں کے احترام اور بہن کی عزت کو بچا گیا۔

اس موقع پر انہوں نے میڈیا نمائندگان کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے محرم الحرام کے حوالہ سے پوری قوم کی ترجمانی کا حق ادا کیا۔ پاکیزہ بتول نے کہا شہدائے کربلا کی یاد چودہ سو سال گزرنے کے بعد بھی اپنے دلوں میں تازہ رکھے ہوئے یہی دعا مانگتے ہیں کی آجکے دن کے صدقے ہماری آنے والی نسلوں میں یہی محبت قائم رہے۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ یقینا یہی غم حسین علیہ السلام ہے جو ہمارے دلوں کی حرارت اور زندگی بخشتا ہے ہمارے دل کربلا و عاشورہ ہیں۔

مسعود نقوی نے کہا حسین علیہ السلام کل بھی زندہ تھے ہیں رہیں گے اور یزید کل بھی مردہ تھا ہے اور رہے گا۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ یزید نے اسلام کے پیغام کو روکنا چاہا لیکن کربلا کا معجزہ دیکھیں اسکے بعد وہاں سے سید الساجدین، زین العابدین پیدا ہوتے ہیں حضرت امام حسین علیہ السلام کا نام تاقیامت زندہ رہے گا لیکن یزید کا نام لینے والا کوئی نہیں۔
اقد حسین نے کہا کہ دعا یہی ہے مولا سید سب شاد و آباد خوشحال رکھیں لبیک یا حسین۔
شمعیں روشن کرنے کے ساتھ ماتم کے اختتام پر عزرداروں میں لنگر تقسیم کیا گیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes