دو خواتین کو قتل کرکے لاشیں فریز کرنے والے مجرم کو عمر قید کی سزا

لندن (کشمیر لنک رپورٹ) دہرے قتل کیس کا معمہ حل ہو گیا جنسی حملے کے ایک سزا یافتہ مجرم پر ان دو خواتین کے قتل کا الزام ثابت، جن کی لاشیں اس کے فریزر سے ملی تھیں۔ ہینریٹ سکس اور میریکین مصطفیٰ کی باقیات اپریل 2019 میں مشرقی لندن میں زاہد یونس کے فلیٹ سے ملی تھیں۔
سدک کراؤن کورٹ میں استغاثہ کے وکیلوں کا کہنا تھا کہ زاہد یونس کمزور خواتین کو اپنا شکار بناتا تھا اور ان پر شدید تشدد کرتا تھا۔زاہد کو عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ اسے کم از کم 38 سال جیل میں گزارنے ہوں گے۔
چار ہفتے تک چلنے والے اس مقدمے کے دوران بتایا گیا کہ پولیس ملزم کو ڈھونڈتی ہوئی اس کے گھر پہنچی تھی کیونکہ پولیس کو ایک ٹیلی فون کال موصول ہوئی تھی جس میں ملزم کی خیریت کے بارے میں تشویش کا اظہار کیا گیا تھا۔جب پولیس گھر پہنچی تو زاہد گھر پر نہیں تھا جس کے بعد پولیس تالا توڑ کر گھر میں داخل ہوئی اور انھوں ایک فریزر پر مکھیاں بھنبھناتی ہوئی دکھائی دیں۔
32 برس کی ہینریٹ سکس کو، جن کا ابتدائی طور پر تعلق ہنگری سے تھا، آخری مرتبہ سنہ 2016 میں زندہ دیکھا گیا تھا۔ کورٹ کو بتایا گیا کہ اس کے کچھ ہی عرصے بعد انھیں ہلاک کر دیا گیا جس کے بعد ملزم نے اسی سال نومبر میں فریزر خریدا تھا۔
زاہد یونس کا دوسرا شکار 38 برس کی میریکین مصطفیٰ تھیں جن کے بارے میں آخری مرتبہ مئی 2018 تک معلومات تھیں۔ دونوں خواتین کے جسموں کی کئی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی تھیں۔ سکس کے سر میں گہرا گھاو تھا جبکہ میریکین مصطفیٰ کے سینے کی ہڈی اور نرخرہ ٹوٹا ہوا تھا۔
یہ دونوں اپنے حالات کے لحاظ سے کمزور خواتین تھیں جن کی زندگی افراتفری کا شکار تھی۔ بے گھر ہونا اور نشہ کرنا بھی ان کی بے ترتیب زندگی کا حصہ رہا تھا۔عدالت کو بتایا گیا کہ زاہد یونس نے ہینریٹ سکس کو قتل کرنے کے کچھ دیر بعد صرف لاش کو چھپانے کے مقصد سے فریزر خریدا۔
ان خواتین کی لاشوں کے تجزیے سے معلوم ہوا کہ مرنے سے پہلے ان پر شدید تشدد کیا گیا تھا۔دونوں کے جسموں کی کئی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی تھیں۔ سکس کے سر میں گہرا گھاؤ تھا جبکہ میریکین مصطفیٰ کے سینے کی ہڈی اور نرخرہ ٹوٹا ہوا تھا۔پولیس کے تفتیش کار سائمن ہارڈنگ نے بتایا کہ فریزر کو ایک اوزار سے کھولا گیا تا کہ یہ دیکھا جائے کہ اندر کیا ہے۔
‘پہلے تو فریزر میں ایک کی لاش نظر آئی لیکن جب فریزر کو جانچ کے لیے وہاں سے لے جایا گیا تو ایکس رے سے معلوم ہوا کہ لاش کے نیچے ایک اور لاش موجود ہے۔ یہ سب کے لیے ایک لرزہ خیز دریافت تھی ،سائمن ہارڈنگ نے ہینریٹ سکس کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ ان کے پہلے بھی جس شخص سے تعلقات تھے وہ ان سے بدسلوکی کرتا تھا اور زاہد یونس نے اسی کا فائدہ اٹھایا۔
جس کے بعد ہینریٹ سکس زاہد کے گھر میں اس کے ساتھ رہنے لگیں،سکس کے خطوط بھی ملے ہیں جو انھوں نے زاہد کو لکھے ہیں۔ بدقسمتی سے اس کے لیے سکس کی کوئی اہمیت نہیں تھی،عدالت کو بتایا گیا کہ زاہد یونس کو پہلے بھی اپنے پارٹنرز کو مارنے پیٹنے کی الزام میں سزائیں ہو چکی ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes