اے پی ایس حملے کے زخمی طالبعلم احمد نواز کو آکسفورڈ یونیسورسٹی میں داخلہ مل گیا

برمنگھم (کشمیرلنک نیوز) طالبان کے ہاتھوں زندہ بچ جانے والے اے پی ایس کے طالبعلم احمد نواز کو انکی محنت کے صلے میں برطانیہ کی معروف درسگاہ آکسفورڈ میں داخلہ مل گیا، اس خبر کو برطانوی میڈیا نے بھی بہت اہتمام سے شائع اور نشر کیا۔

احمد نواز کے والد نواز خان کا کہنا ہے کہ 2014 کا وہ سانحہ زندگی کے کسی لمحے بھولنے والا نہیں جس میں ایک بیٹا شہید ہوگیا تو دوسرا زخموں سے چور تھا۔ یہ میرے لئے ایک بھیانک خواب ہے لیکن پاکستان کے عوام نے ہمیں بہت حوصلہ دیا۔
انکا مزید کہنا تھا کہ احمد جب برطانیہ آیا تو وہ انگریزی نہیں بول سکتا تھا، اسے برطانیہ کے تعلیمی اداروں میں خود کو ایڈجسٹ کرنے کیلئے کافی جدوجہد کرنا پڑی لیکن نہ صرف اپنی فیملی بلکہ پاکستان اوربرطانیہ کے عوام کی جانب سے ملنے والی محبت نے اسے سخت محنت کرنے کا حوصلہ بخشا۔
ابتدا میں احمد کو کنگ ایڈورڈ اسکول میں تعلیم حاصل کرنے کیلئے 14,000پونڈ سالانہ کی اسکالر شپ ملی، جہاں وہ چھ اے سٹار اور دو اے گریڈز لیکر کامیاب ہوا۔ کے بعد وہ انٹرنیشنل بیکولائوریٹ میں تعلیم حاصل کرنے گیا اور وہاں اس نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور آکسفورڈ یونیورسٹی کے انٹرویو میں کامیاب ہوگیا۔
اس موقع احمد نواز کا کہنا تھا کہ انہوں نے شروع سے ہی آکسفورڈ یونیورسٹی میں ہی تعلیم حاصل کرنے کا تہیہ کر رکھا تھا کیونکہ اپنے بھائی اور دوستوں سے محروم ہونے کے بعد تعلیم کی اہمیت میری سمجھ میں آگئی ہے۔

احمد نواز کا مزید کہنا تھا کہ پاکستانی نوجوانوں میں ٹیلنٹ بہت ہے لیکن وہاں اس کے اظہار کے وافر مواقع موجود نہیں ہیں۔ انھوں نے حکومت پاکستان پر زور دیا کہ وہ نوجوانوں کی تربیت پر توجہ دیں کیونکہ نوجوان ہی پاکستان کا مستقبل ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ کس طرح حکومت پاکستان نے پہلے انھیں علاج کیلئے بیرون ملک بھیجنے کے مشورے کو نظر انداز کردیا تھا لیکن پاکستان کے عوام نے میرا ساتھ دیا، جس نے حکومت کو مجھے برطانیہ بھیجنے پر مجبور کیا۔
واضع رہے احمد نواز آکسفورڈ یونیورسٹی میں فلسفہ اور مذہبی علوم کی تعلیم حاصل کرے گا۔ پاکستان کی سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو اور ملالہ یوسف زئی نے بھی اسی میں تعلیم حاصل کی تھی۔

50% LikesVS
50% Dislikes