24 ستمبر کو برطانوی پارلیمنٹ میں چوتھی بار مسئلہ کشمیر پر تفصیلی بحث کی جائے گی

مانچسٹر(محمد فیاض بشیر) مسئلہ کشمیر کے حوالے سے سفارتی سطح پر اہم کوشش، برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر ایشو پر بحث کے لئے تاریخ مقرر ، 24ستمبر کو پارلیمنٹ کے اجلاس میں مسئلہ کشمیر زیر بحث لایا جائے گا ، کشمیر پارلیمنٹری گروپ کے ممبران پارلیمنٹ کی شبانہ روز محنت اور اوورسیز کشمیریوں کی مسلسل کوششوں سے برطانوی پارلیمنٹ میں چوتھی بار مسئلہ کشمیر پر تفصیلی بحث کی جائے گی ۔ برطانوی پارلیمنٹ کی بیک بینچ بزنس کمیٹی نے آل پارٹیز کشمیر پارلیمنٹری گروپ کی درخواست پر بحث کی منظوری دے دی ، کشمیر پارلیمنٹری گروپ کی چیئرپرسن ایم پی ڈیبی ابراھم نے دیگر ممبران کے ہمراہ بحث کے انعقاد کے لئے بھرپور کوشش کی ۔ 24ستمبر کو باقاعدہ بحث کے لئے تاریخ مقرر کر دی گئی ہے۔

اس موقع پر جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے چیئرمین راجہ نجابت حسین کی قیادت میں وفد نے بحث میں زیادہ سے زیادہ پارلیمنٹیرئنز کو کشمیر یوں کے حق خود ارادیت کی حمایت کے لئے آواز بلند کرنے کے لئے ملاقاتیں شروع کر دیں۔ اس موقع پر آل پارٹیز کشمیر پارلیمنٹری گروپ کی چیئرپرسن ایم پی ڈیبی ابراھم نے کہا کہ میں ناصرف مسئلہ کشمیر کے لئے برطانوی پارلیمنٹ بحث کے انعقاد اور دیگر کوششوں کو جاری رکھوں گی بلکہ مسئلہ کے پر امن حل اور کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کرانے کے لئے عالمی سطح پر بھی کشمیریوں کا کیس لڑوں گی ۔ ایم پی ڈیبی ابراھم نے کہا کہ میں مسئلہ کشمیر لئے عالمی فورمز جنیوا ، نیویارک بھی جائوں گی اور اپنے دورے کی تفصیل سے عالمی اداروں کو آگاہ بھی کروں گی۔
اس موقع پر خصوصی ملاقات میں چیئرمین راجہ نجابت حسین اور تحریک حق خود ارادیت یوتھ کے چیئرمین ذیشان عارف نے مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں کی ٹارگٹڈ شہادت ، گھر گھر تلاشی کے نام پر ریاستی دہشت گردی ، کالے قوانین کے تحت کشمیریوں کو غائب کرنے اور لائن آف کنٹرول پر مسلسل فائرنگ سے متاثرہ ہونے والے کشمیریوں کی حالت زار سے آگاہ کیا اور مطالبہ کیا کہ کشمیر پارلیمنٹری گروپ برطانوی حکومت کے ساتھ اس مسئلہ پر بات کر کے بھارت پر عالمی دبائو بڑھانے کے لئے کشمیریوں کی مدد کرے۔
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے چیئرمین راجہ نجابت حسین کی قیادت میں تحریک حق خود ارادیت کے وفد نے پارلیمنٹری گروپ کی چیئرپرسن ایم پی ڈیبی ابراھم کے علاوہ حکمران جماعت کنزرویٹو فرینڈز آف کشمیر کے چیئرمین ایم پی جیمز ڈیلی ، لیبر فرینڈز آف کشمیر کے چیئرمین ایم پی اینڈریو گووِن اور لیبر فرینڈز آف کشمیر کے کنوینئر سابق ممبر یورپین پارلیمنٹ واجد خان سے ملاقاتیں کیں۔
ان ملاقاتوں میں برٹش ممبران پارلیمنٹ نے تحریکی عہدیداروں کو یقین دلایا کہ وہ اپنی اپنی سطح پر کشمیریوں کا کیس اپنی پارٹیوں کے اندر ، پارلیمنٹ اور دیگر فورمز پر لڑیں گے ۔ پارلیمنٹ میں 24ستمبر کی عام بحث میں برطانیہ بھر سے ممبران پارلیمنٹ اجلاس میں شریک ہوں گے اور ہماری کوشش ہے کہ زیادہ سے زیادہ ممبران پارلیمنٹ اس بحث میں کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت اور کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیو ںکے خلاف بات کریں ، برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق حل کرانے کے لئے اقدامات اٹھائے ۔ ہم ہر سطح پر تحریک حق خود ارادیت کی ٹیم کے ساتھ معاونت کریں گے۔
راجہ نجابت حسین کی قیادت میں وفد میں یوتھ کے چیئرمین ذیشان عارف ، ہیری بوٹا ، راجہ شہباز عارف ، سابق کونسلر محبوب احمد اور تحریک حق خود ارادیت لنک شائر کی نو منتخب چیئرپرسن بیرسٹر مصباح کاظمی بھی موجود تھیں۔
دریں اثناء تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کا ایک اہم مشاورتی اجلاس بھی منعقد ہوا جس میں چیئرمین راجہ نجابت حسین کے علاوہ تحریک کے سرپرست اعلیٰ سردار عبدا لرحمان خان ، کونسلر یاسمین ڈار ، امجد حسین مغل ، پامیلا اشرف ملک ، ہیری بوٹا اور یوتھ چیئرمین ذیشان عارف نے شرکت کی ۔ اجلاس میں 24ستمبر کی برطانوی پارلیمنٹ میںکشمیر پر بحث اور برطانویہ و یورپ میں تنظیم کے زیر اہتمام ہونی والی تقریبات کی بھی منظوری دی گئی ۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ملک بھر میں کونسلرز ، سیاسی ، سماجی اور مذہبی رہنمائوں سے رابطے اور اپیل کی جائے گی کہ وہ اپنے اپنے ممبران پارلیمنٹ کو 24ستمبر کی بحث میں شرکت اور کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی حمایت کے لئے رابطے و ملاقاتیں کریں اور ای میل بھی بھیجیں تاکہ اس مرتبہ بحث میں ایک سو سے زائد ممبران کشمیریوں کے حق میں بات کر کے ایک مشترکہ قراردادپاس کروا سکیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes