انگلش چینل کے ذریعے غیر قانونی امیگرینٹس کی برطانیہ آمد جاری، اس سال 6100 افراد کامیاب

لندن (عدیل خان) کینٹ کے ساحل پر چھوٹی کشتی کی ذریعے پہنچنے والے دس افراد کے بعد برطانوی پولیس انگلش چینل کی کڑی نگرانی پر غور کرنے لگی ہے، واضع رہے یہ دس افراد اپنی جان جوکھوں میں ڈال کر ساحل تک پہنچے جہاں راستے میں انکی کشتی ایک بحری جہاز سے ٹکراتے ٹکراے بچی تھی۔ ساحل پر موجود فوٹوگرافرز نے انکی تصاویر بھی بنائیں تاہم انہوں نے کوئی گفتگو نہیں کی اوتر اترتے ہی بھاگ نکلے۔
اس طریقے سے برطانیہ پہنچنے والوں کی تعداد سال میں 6000 سے تجاوز کر گئی۔ ناردرن فرانس سے انگلش چینل عبور کر کے برطانیہ پہنچنے والے افراد نے دھوپ اور پرسکون سمندروں کا فائدہ اٹھارہے ہیں۔
ہوم آفس کے مطابق 27 چھوٹی کشتیوں میں کم از کم 319افراد نے خطرناک سفر کرتے ہوئے چینل کو عبور کیا۔ پی اے نیوز ایجنسی کے اعداد و شمار کے تجزیے سے پتہ چلتا ہے کہ 2020 میں اب 6100سے زیادہ مائیگرنٹس چھوٹی کشتیوں کے ذریعے برطانیہ پہنچنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

گزشتہ چند روز سے لوگوں نے چینل عبور کرنے کے خطرناک سفر کی کوشش روک دی تھیں، اس کے بعد کم ہوائوں کے درمیان بڑی تعداد میں کراسنگ دوبارہ شروع ہوگئی۔ مشتبہ مائیگرنٹس کو ہاربر سائیڈ کی جانب لے جاتے دیکھا گیا، جہاں امیگریشن حکام نے کارروائی کی۔
کلینڈسٹائن چینل تھریٹ کمانڈر ڈان اوماہونی نے کہا کہ ان کشتیوں سے نمٹنے کیلئے میں آج صبح چینل میں ایک کٹر پر باہر گیا تھا جو بارڈر فورس کے افسران کے ساتھ کام کررہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ یہ غیر محفوظ جہاز اس کے مزید ثبوت فراہم کرتے ہیں کہ کرمنلز ان کراسنگز کے ذریعے کس طرح لوگوں کی زندگیوں کو خطرات سے دوچار کر رہے ہیں۔ ہم فرانسیسیوں کے ساتھ مل کر اس پر کام کر رہے ہیں کہ اس روٹ کو مکمل طور پر ناقابل استعمال اور ناممکن بنا دیا جائے۔

50% LikesVS
50% Dislikes