کورونا سے حالات کشیدہ نہ ہوتے تو آزاد کشمیر کی فروغ سیاحت پالیسی آمدنی کیلئے کافی تھی

راچڈیل (محمد فیاض بشیر) برطانیہ کے شہر راچڈیل کے رہائشی بین الاقوامی کاروباری سیاسی سماجی شخصیت خالد چوہدری جو مختلف ممالک کا دورہ کرنے کے بعد اپنے آبائی شہر سیالکوٹ پہنچ چکے ہیں نے ایک وفد جس میں آزاد کشمیر کے وزیر جیل خانہ جات چوہدری محمد اسحاق، رکن پنجاب اسمبلی رانا عارف اقبال، کاروباری سیاسی شخصیت خلیل عرف عامر سیال کے ہمراہ وریو خاندان کے سینیئر سیاستدان و سابق رکن و وزیر پنجاب اسمبلی چوہدری خؤش اختر سبحانی، سابق رکن قومی اسمبلی ارمغان سبحانی،سابق رکن پنجاب اسمبلی و ضلعی صدر مسلم لیگ ن سیالکوٹ چوہدری طارق سبحانی سے انکی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔

اس موقع پر پاکستان کی موجودہ سیاسی کشیدہ صورتحال بارے تفصیلی بات چیت کرتے ہوئے میاں شہباز شریف کی گرفتاری کو انتقامی کارروائی قرار دیا۔ چوہدری خالد نے وزیر جیل خانہ جات آزاد کشمیر چوہدری محمد اسحاق سے آزاد کشمیر کے امن و امان و دیگر بارے استفسار کرنے پر چوہدری محمد اسحاق نے کہا کہ آزاد کشمیر پر امن خطہ ہے کشمیر میں ہماری حکومت نے سڑکوں کا جال بچھا دیا ہے حالیہ ہی ہم نے ہسپتالوں میں ایمرجنسی علاج معالجہ سب کے لیے مفت کر دیا ہے اور مختلف شعبہ ہائے زندگی میں تقرریاں و تبادلے اہلیت و قابلیت کی بنا پر کیے جاتے اس سلسلے میں پبلک سروس کمیشن کا کردار مثالی ہے۔

ان کا مذید کہنا تھا کہ اگر کورونا وائرس کی وبا سے حالات کشیدہ نہ ہوتے تو ہماری حکومت نے سیاحت کو اندر فروغ دے دیا تھا یہی آمدنی کشمیر کے لیے کافی تھی ۔ ان کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے وزیر جیل خانہ جات میں آپ کو بتاتا چلوں خطہ میں ذاتی دشمنیوں کی وجہ سے قتل کی وارداتوں میں ملوث یا پھر اور جرائم میں ملوث افراد جیل میں ہیں ڈکیتی چوری کی وارداتوں میں ملوث شاید ہی کوئ فرد ہو ایسا پرامن خطہ رہنے کام کرنے کے لیے مثالی ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes