سفیر پاکستان نے ویانا میں بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے مستقل نمائندے کی حیثیت سے اپنی اسناد پیش کردیں

ویانا (کشمیر لنک نیوز) آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں سفیر پاکستان آفتاب احمد کھوکھر نے بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی (IAEA) کے مستقل نمائندے کی حیثیت سے اپنی اسناد پیش کیں۔ سفیر پاکستان آفتاب احمد اور ڈائریکٹر جنرل گروسی نے پاکستان اور آئی اے ای اے کے مابین باہمی فائدہ مند تعاون کے بارے میں تفصیلی تبادلہ خیال بھی کیا ، جس میں بجلی کی پیداوار ، انسانی اور جانوروں کی صحت ، صنعت اور زراعت سمیت متعدد شعبوں میں جوہری ٹیکنالوجی کا استعمال شامل ہے۔

ڈائریکٹر جنرل گروسی نے ایٹمی تحفظ اور تحفظ ماحولیات بارے میں پاکستان کے بہترین ریکارڈ کے ساتھ ساتھ اس کے قابل اطلاق حفاظتی ذمہ داریوں کے نفاذ میں ایجنسی کے تعاون کو سراہا۔ سفیر پاکستان آفتاب احمد نے ڈائریکٹر جنرل گروسی کو 10،000 یورو کا چیک پیش کیا کیوں کہ ایجنسی کے زونوٹک بیماریوں کے انضمام ایکشن (ZODIAC) منصوبے میں پاکستان کی شراکت ہے جس کا مقصد ZONotic بیماریوں کی طرح COVID-19 کے پھیلنے سے بچاؤ ، ان کا پتہ لگانے اور اس کا جواب دینا ہے۔

انہوں نے ایٹمی ٹیکنالوجی کے پرامن استعمال کو فروغ دینے کے مینڈیٹ کی فراہمی میں پاکستان کی ایجنسی کو مسلسل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ پاکستان جوہری توانائی کمیشن (پی اے ای سی) کے چیئرمین کی جانب سے سفیر پاکستان آفتاب احمد کھوکھر نے بھی ڈائریکٹر جنرل گروسی کو دورہ پاکستان کی باضابطہ دعوت دی۔ ڈائریکٹر جنرل نے اس دعوت پر ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ وہ پاکستان کے دورے کے منتظر ہیں۔
واضع رہے پاکستان آئی اے ای اے کے بانی ممبروں میں سے ایک ہے اور اس نے اپنے بورڈ آف گورنرز میں باقاعدگی سے خدمات انجام دیں جو اس کا اعلی ترین پالیسی بنانے والا ادارہ ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes