کورونا کی رحمتیں ارب پتی افراد کی مجموعی دولت دس اعشاریہ دو ٹریلین ڈالر ہوگئی

لندن( عمران راجہ) کورونا وائرس کا مخمصہ اگر عوام کی سمجھ میں نہیں آرہا تو اسکی متعدد وجوہات بھی ہیں۔ اس وبا نے جہاں اکثریتی عوام کا جینا محال کردیا وہیں کئی لوگوں گھر بیٹھے ارب پتی بنادیا ہے۔
عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق کورونا کے دوران سوئٹزرلینڈ کے سب سے بڑے بینک یو بی ایس اور اکاؤنٹنگ کے بڑے ادارے پرائس واٹر ہاؤس کوپر کی ایک تحقیق کے مطابق جولائی کے آخر تک ارب پتی افراد کی مجموعی دولت دس اعشاریہ دو ٹریلین ڈالر پہنچ گئی ہے۔

یہ دولت 2017 میں ریکارڈ کی گئی آٹھ اعشاریہ نو ٹریلین ڈالر کی بلندی سے تجاوز کر گئی ہے۔ سالانہ انوینٹری میں جولائی کے آخر تک 2 ہزار 189 ارب پتیوں کی نشاندہی ہوئی ہے۔
رپورٹ کے مطابق کاروبار میں جدت لانے والے افراد آج کے معاشرے کے رہنما بننے کے لیے ٹیکنالوجی کا استعمال کر رہے ہیں۔

کورونا وائرس کے بحران نے ابھی تک تکنیکی، صحت اور صنعت کے جدت پسندوں کے مابین فرق کو بڑھ دیا ہے جو پہلے ہی عروج پر تھا جبکہ دیگر ارب پتی جو معاشی، تکنیکی، معاشرتی اور ماحولیاتی رجحانات کے غلط رخ پر ہیں وہ کم دولت مند ہوتے جا رہے ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes