فرانس میں گستاخانہ خاکوں پر گفتگو کرنے والے استاد کا سرقلم؛ چیچن حملہ آور بھی مارا گیا

پیرس (کشمیر لنک نیوز) فرانس میں مختصر عرصے میں دہشت گردی کا دوسرا بڑا واقعہ، استادکا سرقلم کردیا گیا۔
تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ پیرس کے شمال مغرب میں واقع کونفلان سینٹ اونوریئن میں پیش آیا۔ جہاں کئی روز قبل اسکول کے استاد نے بچوں سے پیغمبرِ اسلام کے گستاخانہ خاکوں پر گفتگو شروع کی تھی جس پر کئی والدین نے اپنے غم و غصے کا اظہار کیا تھا۔

آج موقع پا کر ایک چیچن نوجوان نے اس استاد کا گلا کاٹ کر قتل کردیا جبکہ پولیس نے حملہ آور کو گولی مار کر ہلاک کر دیا جس سے ناصرف فرانس بلکہ یورپ بھر میں تشویش کی نئی لہر دوڑ گئی ہے۔
ہلاک ہونے والے استاد نے کچھ روز قبل بچوں کو حضرتِ محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے خاکے بھی دکھائے تھے۔ بعد ازاں چیچن نوجوان نے استاد پر خنجر سے حملہ کرکے اسے مار دیا۔ فرانسیسی پولیس نے اسے دہشت گردی کا واقعہ قرار دیا ہے۔

پولیس کے مطابق 18 سالہ حملہ آور کو لڑکوں کے اسکول سے باہر آتے ہوئے 600 میٹر دوری پر گولی کا نشانہ بنایا گیا جس کے ہاتھوں میں خنجر بھی دیکھا گیا۔ عینی شاہدین کے مطابق اس نے استاد کی گردن پر حملہ کیا تھا۔
فرانسیسی صدر ایمینوئل میکخواں نے جائے وقوع کا دورہ کیا اور اس قاتلانہ حملے کو اسلامی دہشت گردانہ حملہ قرار دیا ہے۔ فرانسیسی صدر کا کہنا تھا کہ استاد کو اس لیے قتل کیا گیا کیونکہ وہ اظہار رائے کی آزادی کے متعلق پڑھاتے تھے۔


تین ہفتے قبل بھی ایک حملہ آور نے خاکے چھاپنے والے میگزین کے سابقہ دفاتر کے باہر حملہ کر کے دو افراد کو زخمی کیا تھا۔
تازہ ترین واقعے میں حملہ آور نے قتل کے بعد وہاں سے فرار ہونے کی کوشش کی لیکن وہاں موجود لوگوں نے فوراً پولیس کو اطلاع دے دی۔

پولیس کا جائے وقوعہ کے قریبی علاقے میں ہی حملہ آور سے سامنا ہو گیا اور جب انھوں نے اسے گرفتاری دینے کا کہا تو بتایا جاتا ہے کہ اس نے پولیس کو دھمکانے کی کوشش کی۔
جس پر پولیس اہلکاروں نے حملہ آور کو گولی ماری اور اس کے کچھ دیر بعد وہ ہلاک ہو گیا۔ پولیس نے جائے وقوع کو سیل کر دیا ہے اور تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔

فرینسیسی پارلیمنٹ میں بھی اس دہشت گردانہ کاروائی کی مذمت کی گئی اور منگل کو خصوصی اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

پولیس نے یہ اعتراف بھی کیا ہے کہ اس عمل کے خلاف بہت سے والدین نے شکایت درج کرائی تھی تاہم استاد کو مارنے والے شخص کا کوئی شناسا اسکول میں نہیں پڑھتا۔ دوسری جانب پولیس نے بتایا کہ حملہ آور کا تعلق چیچنیا سے ہے جو فرانس میں پناہ گزین تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes