عظیم برطانوی مصنف ولیم شیکسپیئر کی پہلی کتاب ایک کروڑ امریکی ڈالرز میں نیلام

لندن (عمران راجہ) عظیم مصنف اور دنیا کے نامور ڈرامی نگار ولیم شیکسپیئر کی پہلی کتاب ایک کروڑ ڈالر میں نیلام کردی گئی۔ رپورٹس کے مطابق ولیم شیکسپیئر کی 1623 میں لکھی گئی کتاب کو امریکی شہر نیویارک کے کرسٹیز نیلام گھر میں فروخت کیا گیا۔

شیکسپیئر کی جس کتاب کو 99 لاکھ 98 ہزار امریکی ڈالر یعنی پاکستانی تقریبا ڈیڑھ ارب روپے سے زائد میں فروخت کیا گیا، اسے دی فرسٹ فولیو کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔دی فرسٹ فولیو کو ولیم شیکسپیئر کی موت کے 7 سال بعد ان کے لکھاری دوستوں جان ہیمنگس اور ہینری کونڈیل نے ترتیب دے کر شائع کروایا تھا۔
ولیم شیکسپیئر کی موت 1616 میں ہوگئی تھی اور ان کی پہلی کتاب کو 1623 میں شائع کیا گیا، جس میں مجموعی طور پر 36 ڈرامے اور کہانیاں دی گئیں۔ولیم شیکسپیئر کی پہلی کتاب میں ان کے مقبول ترین ڈرامے جولیس سیزر سمیت 18 ایسی کہانیاں شائع کی گئیں، جنہیں پہلے کبھی شائع نہیں کیا گیا تھا۔

ولیم شیکسپیئر کی پہلی کتاب کو جہاں ریکارڈ قیمت میں فروخت کیا گیا، وہیں وہ دنیا کی پہلی ادبی تخلیق بھی بن گئی، جسے ایک کروڑ ڈالر کی قیمت پر فروخت کیا گیا۔کتاب کی فروخت سے قبل نیلام گھر نے اندازے لگائے تھے کہ کتاب 65 لاکھ سے 75 لاکھ ڈالر کے درمیان فروخت ہوگی، تاہم کتاب اندازوں سے کہیں زیادہ قیمت پر فروخت ہوگئی۔
امریکی ریاست کیلی فورنیا کے جس کالج نے مذکورہ کتاب کو فروخت کے لیے پیش کیا، اس کے پاس یہ کتاب 19 ویں صدی کے آغاز میں آئے تھی اور تب سے کالج انتظامیہ نے کتاب کو محفوظ کر رکھا تھا۔

واضع رہے دنیا کے اس عظیم مصنف نے محض 38 ڈرامے یا قصے لکھے جب کہ ان کی نظموں کی تعداد بھی 150 تک ہے، ادب کی دنیا کی یہ عظیم ہستی ولیم شیکسپیئر 1564 میں انگلستان میں لندن کے قریب ایک چھوٹے سے قصبے سٹریٹفورڈ اپون ایون میں پیدا ہوئے، انہیں جہاں انگلستان اور انگریزی زبان کا بے سب سے بڑا شاعر و لکھاری مانا جاتا ہے، وہیں اسے دنیا کے عظیم مصنفوں میں بھی شمار کیا جاتا ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes