اقلیتی کمیونٹیز سے زیادہ خواتین کا پولیس فورس میں بھرتی ہونا خوش آئیند ہے؛ برطانوی وزیر – Kashmir Link London

اقلیتی کمیونٹیز سے زیادہ خواتین کا پولیس فورس میں بھرتی ہونا خوش آئیند ہے؛ برطانوی وزیر

لندن(کشمیر لنک نیوز) کرئم اینڈ پولیسنگ کے برطانوی وزیر کٹ مالٹ ہائوس کا کہنا ہے کہ پولیس فورس کی بڑی اکثریت ہر وقت سیکھنے اور سمجھنے کے عمل سے گذرنے پر یقین رکھتی ہے تاہم کچھ واقعات ایسے ہوتے ہیں جو اس تاثر کو زائل کردیتے ہیں۔
پولیس میں نئی نوکریوں میں عوامی دلچسپی کے حواپے ایک ریڈیو انٹرویو میں انکا کہنا تھا کہ بہت مختصر سے عرصے میں ادارے کو ستر ہزار سے زائد بھرتی کی ستر ہزار سے زائد درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔
انکا کہنا تھا کہ پولیس فورس میں بلیک ایشین اینڈ مینارٹی ایتھنک (بی اے ایم ای) کمیونٹیز سے تعلق رکھنے والی سمیت مزید خواتین پولیس آفیسرز کی ریکروٹمنٹ بھی اچھی پیشرفت ہے۔


برطانوی وزیر کا کہنا تھا کہ فی الوقت ہم نے 3000 بھرتیاں کی ہیں، گو ہمارے پیٹرن کے دیکھنے کیلئے یہ ایک چھوٹی تعداد ہے مگر ہم اسے مانیٹر کرتے رہینگے۔
انکا کہنا تھا کہ کچھ برسوں سے پولیس کیلئے یہ ایک چیلنج رہا ہے۔ بیس سال پہلے صرف 2 فیصد پولیس آفیسرز بی اے ایم ای بیک گرائونڈ رکھتے تھے اور اب یہ تعداد تقریباً 7 فیصد ہے۔
10 سال قبل خواتین کی تعداد 25 فیصد تھی، اب پولیس میں خواتین آفیسرز کا تناسب 30 فیصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم مزید آگے بڑھنے کیلئے اسے استعمال کرنا چاہتے ہیں اور ہمیں اچھی پیشرفت دکھائی دے رہی ہے۔