آئیندہ سال جنوری میں بریگزٹ تکمیل کے بعد برطانیہ کا نیا امیگریشن سسٹم متعارف – Kashmir Link London

آئیندہ سال جنوری میں بریگزٹ تکمیل کے بعد برطانیہ کا نیا امیگریشن سسٹم متعارف

لندن (کشمیر لنک نیوز) آئیندہ سال جنوری میں یورپی ممالک کیساتھ آزادانہ آمد و رفت کے خاتمے کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال کے پیش نظر برطانیہ نے فاسٹ ٹریک ویزہ سسٹم کی تفصیلات شائع کردی ہیں۔
اس سسٹم میں طبی عملے کو فوقیت دی گئی ہے۔
وزیر داخلہ پریتی پٹیل کا کہنا ہے کہ برطانوی بارڈر بند ہونے کے بعد ہماری پہلی ترجیح ہمارے اپنے ورکرز ہونگے۔ اور ہم انہی پر سرمایہ کاری پہ زور دینگے۔
ساتھ ہی انکا کہنا تھا کہ جدید دنیا سے مطابقت کیلئے دنیا بھر سے بہترین اذہان کا حصول بھی ضروری ہے۔
نئے برطانوی امیگریشن سسٹم کے تحت ہیلتھ اینڈ کیئر ویزہ کیلئے درخواست گذار کے پاس برطانوی جاب آفر کا ہونا ضروری ہوگا۔


حکومت کا کہنا ہے کہ وہ برطانیہ کی بین الاقوامی سرحدوں کی زیادہ مؤثر نگرانی اور سخت چیکنگ کو یقینی بنانے کے لیے اضافی طور پر تقریباﹰ 800 ملین پاؤنڈ خرچ کرے گی۔
حکومت کے مطابق برطانیہ کے یورپی یونین سے اخراج یا بریگزٹ کے عمل کی تکمیل کے بعد ملک میں تارکین وطن کی آمد کو زیادہ منظم بنانے کے لیے نیا امیگریشن نظام متعارف کرایا جائے گا۔ یہ نظام پوائنٹس کی بنیاد پر کام کرے گا اور ایک ایسا سسٹم ہو گا، جو ملک میں زیادہ ہنرمند اور ماہر تارکین وطن کی آمد کو تیز رفتار اور آسان بنا دے گا۔
برطانوی خاتون وزیر داخلہ پریتی پٹیل کے مطابق یہ نیا نظام یکم جنوری 2021ء سے نافذالعمل ہو جائے گا، جب بریگزٹ کے بعد 11 ماہ کا عبوری عرصہ مکمل ہو جائے گا۔ انکا ماننا ہے کہ بریگزٹ کی تکمیل کے بعد کے عرصے میں برطانیہ ایک ایسا خود مختار ملک ہو گا، جس کا نیا امیگریشن نظام دنیا بھر سے بہترین ہنر مند تارکین وطن کو برطانیہ آنے کی ترغیب دے گا۔