برسٹل میں ایڈورڈ کولسٹن کی جگہ نصب کیا جانے والا نیا مجسمہ ایک روز بعد ہٹا دیا گیا – Kashmir Link London

برسٹل میں ایڈورڈ کولسٹن کی جگہ نصب کیا جانے والا نیا مجسمہ ایک روز بعد ہٹا دیا گیا

برسٹل (کشمیر لنک نیوز) برسٹل میں بلیک لائیوز میٹر کی روح رواں خاتون کا مجسمہ ایک روز بعد ہی برسٹل کونسل نے اتار کر عجائب گھر میں رکھوادیا، کونسل ترجمان کا کہنا ہے کہ یہ مجسمہ بغیر اجازت نصب کیا گیا تھا۔


گذشتہ ماہ بلیک لائیوز میٹر احتجاج کے دوران سیاہ فام افراد کی تجارت کرنے والے تاجر ایڈورڈ کولسٹن کا مجسمہ گرا دیا گیا تھا جسے بعد ازاں مظاہرین نے دریا میں پھینک دیا تھا اس جگہ بلیک لائیوز میٹر مہم میں شامل ایک خاتون جین ریڈ کا مجسمہ لگا دیا گیا تھا۔
مارچ کے دوران جب کولسٹن کا مجسمہ گرایا گیا تو اُس کے بعد اس خالی ستون پر مظاہرین میں شامل جین ریڈ کو کھڑا کر کے اُن کی تصاویر لی گئی تھیں۔


ایڈورڈ کولسٹن کی جگہ جین ریڈ کا مجسمہ نصب کیے جانے پر سوشل میڈیا پر ملا جلا ردِعمل سامنے آیا تھا۔ جہاں کئی افراد کو ایڈورڈ کولسٹن کی جگہ جین ریڈ کا مجسمہ نصب کرنا پسند آیا ہے وہیں کئی صارفین اس پر تنقید کرتے بھی نظر آ ئے۔
شان ہاکی نامی صارف سمیت بہت سے افراد نے اُس لمحے کی تصویر شیئر کی جب جین ریڈ، کولسٹن کا مجسمہ گرائے جانے کے بعد ستون پر چڑھیں۔


ایک اور ٹویٹر صارف نے لکھا بلیک لائیوز میٹر مہم کے مظاہرین میں شامل جین ریڈ کا مجسمہ ہماری تاریخ کی اُن چیزوں میں شامل ہے جس پر ہم فخر کر سکتے ہیں۔
کارا نامی صارف کا کہنا ہے کہ کیا ایک مجرم کا مجسمہ ہٹا کر ایک اور مجرم کا مجسمہ لگانا درست ہے؟ اس کی جگہ ایسی کسی شخصیت کا مجسمہ کیوں نہیں لگایا گیا۔ کارا کا اشارہ اپنی ٹویٹ کے ساتھ شیئر کی گئی اس تصویر میں موجود پرنسس کیمبل نامی ایک نرس کی طرف تھا۔
مجسمے بارے جین ریہڈ کا کہنا ہے کہ میرے شوہر نے احتجاج کے دن تصویر کھینچ کر اپنے سوشل میڈیا پر ڈال دی تھی۔ مارک کوئن (مجسمہ ساز) نے ان کو پیغام بھیجا جس کے بعد مجھ سے اُن کا رابطہ ہوا۔
بہت سوں نے تو یہ سوال بھی اٹھا دیا ہے کہ آیا اس نئے مجسمے کو یہاں مستقل لگانا درست ہے ؟

پرانے مجسمے کو اتارے جانے اور دریا میں بہانے کا عمل

برسٹل کونسل کی طرف سے علی الصبح مذکورہ مجسمہ اتار لیا گیا، کونسل ترجمان کا کہنا ہے کہ اسے میوزیم میں امانت کے طور پر رکھوادیا گیا ہے، مجسمہ ساز چاہے تو لیجائے یا پھر عجائب گھر کو تحفے میں دے سکتا ہے۔
برسٹل میئر مارون ریس کا کہنا ہے کہ ایڈورڈ کولسٹن کے مجسمے کے بعد خالی ہونے والی جگہ پر جو بھی شے منظوری کے بغیر نصب کی جائے گی اسے ہٹا دیا جائے گا۔