ڈربی؛ انٹرا اسکواڈ چار روزہ میچ میں اسد شفیق نے فارم بحال کرلی – Kashmir Link London

ڈربی؛ انٹرا اسکواڈ چار روزہ میچ میں اسد شفیق نے فارم بحال کرلی

ڈربی( سپورٹس رپورٹر) انگلینڈ کے دورے پر آئی پاکستان کرکٹ ٹیم کے اہم بیٹسمین اسد شفیق نے انٹرا اسکواڈ چار روزہ میچ میں اپنی فارم بحال کرلی انہوں نے ناقابل شکست 50 رنز بنا کر گرین ٹیم کو پانچ وکٹوں پر 162رنز تک پہنچا دیا، کپتان اظہرعلی اور افتخار احمد بھی انفرادی طور پر 31رنز تک رسائی پا سکے لیکن ان کی ٹیم پر 87رنز کا خسارہ بدستور برقرار ہے اور مشکل کنڈیشنز میں بیٹسمینوں کو روانی کے ساتھ اسکورنگ میں ناکامی درپیش ہے۔ اس سے قبل ٹیم وائٹ محمد رضوان کے ناقابل شکست 54 رنز کی بدولت 249 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی، نسیم شاہ نے پانچ شکار کئے۔

تفصیلات کے مطابق ڈربی شائر کے کاؤنٹی گراؤنڈ پر جاری قومی کرکٹ ٹیم کے چار روزہ انٹرا اسکواڈ میچ کے دوسرے روز ٹیم وائٹ نے اپنی پہلی نامکمل اننگز آٹھ وکٹوں پر 231رنز سے دوبارہ شروع کی لیکن پوری ٹیم 249رنز پر محدود ہو گئی جس میں وکٹ کیپر محمد رضوان چھ چوکوں کی مدد سے 54رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے جبکہ کاشف بھٹی نے بھی 15رنز کا اضافہ کیا۔نسیم شاہ نے عمدہ بالنگ کرتے ہوئے پانچ کھلاڑیوں کو ٹھکانے لگایا جبکہ محمد عباس نے تین اور یاسر شاہ نے دو شکار کئے۔

ٹیم گرین کی جانب سے فخرزمان اور عابد علی نے اننگز شروع کی تو 26رنز کی افتتاحی شراکت اس وقت ختم ہو گئی جب عابد علی کو دس رنز بنانے کے بعد سہیل خان نے وکٹوں کے عقب میں کیچ کرادیا۔ فخرزمان بھی 17رنز بنا کر عثمان شنواری کی گیند پر شاداب خان کو کیچ تھما گئے تو اظہرعلی اور اسد شفیق نے کھانے کے وقفے تک اسکور دو وکٹوں پر 63رنز تک پہنچا دیا۔

دوسرے سیشن میں اسکور 82رنز تھا تو کپتان اظہرعلی بھی چار چوکوں سمیت 31رنز بنا کر شاہین آفریدی کا شکار ہو گئے اور افتخار احمد کو اسد شفیق کے ساتھ اننگز آگے بڑھانا پڑی لیکن اس دوران اسکورنگ میں سست روی نمایاں رہی اور تیز بالنگ کیلئے سازگار ماحول میں دونوں بیٹسمین محتاط بیٹنگ کرتے رہے اور چائے کے وقفے تک اسکور تین وکٹوں پر 111رنز تک ہی پہنچایا جا سکا۔ اس دوران بادلوں سے ڈھکے آسمان تلے خراب روشنی کے باعث کھیل روکنا بھی پڑا البتہ تیسرے سیشن میں اسکور 138رنز تھا تو دو مواقع سمیت31رنز بنانے والے افتخار احمد کو سہیل خان نے ایل بی ڈبلیو کردیا اور کچھ دیر بعد سرفراز احمد بھی پانچ رنز بنا کر سہیل خان کے ہاتھوں ایل بی ڈبلیو ہو گئے تو گرین ٹیم کی پانچ وکٹیں 146 رنز پر گر چکی تھیں۔

اس موقع پر اسد شفیق نے ایک اینڈ سنبھالے رکھا اور پانچ چوکوں سے مرصع نصف سنچری مکمل کرلی لیکن خراب روشنی کے باعث دن کا اختتام قبل از وقت کرنا پڑا تو اسد شفیق 50 اور فہیم اشرف پانچ رنز پر کھیل رہے تھے جبکہ مجموعی اسکور پانچ وکٹوں پر 162رنز تک جا پہنچا تھا لیکن گرین ٹیم اب بھی 87 رنز کے خسارے میں ہے ۔سہیل خان نے تین وکٹیں حاصل کیں جبکہ شاہین آفریدی اور عثمان شنواری نے ایک،ایک شکار پر اکتفا کیا۔

اس میچ میں ایک بری خبر یہ سننے کو آئی کہ بائیں ہاتھ سے کھیلنے والے بیٹسمین خوشدل شاہ انگلی کے فریکچر کی وجہ سے کم از کم تین ہفتوں کیلئے کھیل سے معذور ہوگئے۔