اوورسیز پاکستانیز یونائیٹڈ فورم کا آن لائن سیمینار، اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل پر بحث – Kashmir Link London

اوورسیز پاکستانیز یونائیٹڈ فورم کا آن لائن سیمینار، اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل پر بحث

برمنگھم (کشمیر لنک نیوز) اوورسیز پاکستانیز یونائیٹڈ فورم کے زیر اہتمام ایک آن لائن سیمینار منعقد کیا گیا۔ سیمینار کا مقصداوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق، ان کا پاکستان کی پارلیمنٹ میں کردار اور دیگر مسائل کو زیر بحث لانا تھا۔ سیمینار میں دنیا بھر میں مقیم پاکستانی تارکین نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔اس موقع پر امریکہ ،کینیڈا، یورپ،برطانیہ اور مشرق وسطیٰ میں مقیم مختلف سیاسی و سماجی تنظیموں کے رہنماؤں،وکلا،تجزیہ نگاروں اور سینئر صحافیوں کی مختلف تجاویز سامنے آئیں۔

سیمینار کی صدارت پی پی پی گلف مڈل ایسٹ کے صدر اور او پی یو ایف کے چیئرمین میاں منیرہانس نے کی۔تقریب کے میزبان سیف اللہ سیفی تھے جب کہ نظامت کے فرائض معروف شاعرہ اور پروگرام آرگنائزر عائشہ شیخ عاشی نے انجام دیئے۔ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے محمد اشرف صدیقی نے کہا کہ بے شک بیرون ملک مقیم تمام پاکستانی نہ صرف ووٹ کا حق اور پارلیمنٹ میں نمائندگی چاہتے ہیں بلکہ ان کی یہ بھی خواہش ہے کہ حکومتیں اوورسیز پاکستانیوں کے بارے میں میں کوئی پالیسی تشکیل دینے سے پہلے انھیں اعتماد میں لیں۔سینئر صحافی خالد حمید فاروقی نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس بات سے کوئی اختلاف نہیں کرسکتا کہ اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق ضرور ملنا چاہیے۔انھوں نے کہا کہ تارکین وطن پاکستانیوں کے صرف ووٹ کے حق اور پارلیمنٹ میں نمائندگی کے علاوہ دیگر مسائل پر بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔تارکین وطن کی حوصلہ افزائی بیرون ملک پاکستان کے سوفٹ امیج کو فروغ دینے میں بہت فائدہ مند ہوگی۔

کینیڈا میں مقیم سیاسی شخصیت مطلوب وڑائچ کا کہنا تھا کہ اس موضوع پر ہر پہلوسے سوچ بچار کرنے کی ضرورت ہے۔انھوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کی اس بارے رائے بہت اہم ہوگی۔ طاہر منیر طاہر کا کہنا تھا کہ اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق ملنا چاہیے لیکن اس کا طریقہ کار کیا ہوگا اور اسے مانیٹر کون کرے گا۔مسلم لیگ ن کے یو اے ای میں صدر غلام مصطفیٰ مغل نے کہا کہ اوور سیز پاکستانیوں کے مسائل انہی کے منتخب کردہ نمائندے ہی بہتر طریقے سے حل کرا سکیں گے۔انھوں نے کہا کہ ہمیں ووٹ کا حق ضرور ملنا چاہیے لیکن ہمارا ووٹ محفوظ بھی ہونا چاہیے۔

پی پی پی برطانیہ کے صدرمحسن باری نےکہا کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی واضح طور پر کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ انہی کے امیدوار کو ملنے چاہئیں ۔ پی پی پی کینیڈا کے جنرل سیکرٹری طاہر راؤ نے کہا کہ عوام میں یہ تاثر دینے کی کوشش کی جارہی ہے کہ شاید پیپلز پارٹی اس ووٹ کے حق میں نہیں جب کہ ایسا ہرگز نہیں ۔پیپلز پارٹی پاکستان کی واحد جماعت ہے جس نے اوورسیز پاکستانیوں کے لیےسب سے زیادہ کام کئے۔ پاکستان تحریک انصاف کی رہنما یاسمین کنول کا کہنا تھا کہ ہمیں ووٹ کا حق ملنا چاہیے تا کہ ہم اپنے نمائندے خود منتخب کر سکیں۔پی پی پی گلف خواتین ونگ کی جنرل سیکرٹری فرح احسن عباسی کا کہنا تھا اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق ملنا ہمارا بنیادی حق ہے۔

دیگر مقررین میں دبئی سے مخدوم رئیس ایڈووکیٹ،امریکہ سے اٹارنی ایٹ لا مجاہد خان،ماسکو سے سید اشتیاق ہمدانی شامل تھے۔ان مقررین نے اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کے حق میں تفصیل سے گفتگو کرتے ہوئےکہا کہ ہمیں صرف ووٹ کا حق نہیں بلکہ ہمارے اور بھی بہت سے حقوق ہیں جو ہمیں ملنے چاہئیں۔ پاکستان میں ووٹ چوری ہوجاتے ہیں تو اوورسیز میں ووٹ کی چوری کو کیسےبچائیں گے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان میں اوورسیز پاکستانیوں کی زمینوں پر قبضہ ہوجائے تو وہ چھڑانا ہی مشکل ہوتا ہے، ایسےاور بہت سے مسائل جن کا حل نکالنا ضروری ہے۔ مقررین اس بات پر متفق تھے کہ اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ کا حق اور پارلیمنٹ میں نمائندگی ضرور ملنی چاہیے لیکن اس کے لیے شفاف اور واضح قانون سازی کی ضرورت ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes