برٹش مسلم کمیونٹی کو درپیش اخلاقی و سماجی مسائل کے حوالے سے علمائے کرام کی مشاورت – Kashmir Link London

برٹش مسلم کمیونٹی کو درپیش اخلاقی و سماجی مسائل کے حوالے سے علمائے کرام کی مشاورت

نوٹنگھم (کشمیر لنک نیوز) مسلم کمیونٹی کو اپنی مساجد کے انتظام و انصرام کی طرف خصوصی توجہ کی ضرورت ہے اور اس سے ملحق مدارس میں مضبوط نظام تعلیم کے ذریعے نسل نو کی کردار سازی میں کامیابی ممکن ہے۔ انگلینڈ کے علاقے نوٹنگھم شائر میں، جامعہ الکرم میں ایک خصوصی ملاقات میں علمائے کرام کی طویل مشاورت ہوئی جس میں برطانوی مسلم کمیونٹی کو درپیش اخلاقی و سماجی مسائل پر سیرحاصل بحث اور مساجد و مدارس میں رائج تعلیمی نظام کے حوالے سے گفتگو ہوئی اور مستقبل میں بہتر نتائج حاصل کرنے کی اہمیت پر زور دیا گیا۔

جامعہ الکرم کے بانی اور ڈائریکٹر معروف مدرس و مصنف علامہ پیر زادہ امداد حسین نے مہمان علمائے کرام کو ادارے کا وزٹ کرایا، باالخصوص کثیر لاگت سے تیار ہونے والے ’’گرلز بورڈنگ اسکول‘‘ کی پُرشکوہ عمارت دکھائی اور اس میں مختلف شعبوں اور دیگر مثبت سرگرمیوں کی تفصیل بیان کی۔ علامہ پیر زادہ امداد حسین کا کہنا تھا کہ جامعہ الکرم نے کئی دہائیوں سے خدمت انسانیت اور ترویح علم کا شعبہ کامیابی کے ساتھ چلایا ہے اور مزید فلاحی و تعلیمی منصوبے زیر غور ہیں، لڑکیوں کے لیے قائم کردہ اسکول ایک خوبصورت پروجیکٹ ہے جس سے آنے والی نسلیں استفادہ کریں گی۔

مفتی محمد اسلم نقشبندی نے ان منصوبوں پر نہایت مسرت کا اظہار کیا اور پیر زادہ امداد حسین کے عظیم علمی کام کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہم ایسے پروجیکٹ متعارف کرواکے ہی حقیقی معنوں میں دین کی خدمت بجا لاسکتے ہیں۔ علم، شعور اور وقار بخشتا ہے جس قوم نے بھی عزت پائی صرف زیور علم سے ہی پائی۔ الفیص ٹرسٹ کے چیئرمین علامہ محمد سجاد رضوی نے کہا کہ ہمارے بزرگوں کی محنت شاقہ سے برطانیہ میں مساجد و مدارس کا خوبصورت سلسلہ پھیلا، اب ہمارے لیے لازم ہے کہ ان کے نظام تعلیم کی طرف سنجیدگی سے توجہ دیں تاکہ مسلمانوں کا علمی و فکری رجحان ترقی پائے۔

50% LikesVS
50% Dislikes