حکومت کی غلط اپروچ کے باعث پاکستان کشمیر پر سفارتی تنہائی کا شکار ہے،راجہ فاروق حیدر – Kashmir Link London

حکومت کی غلط اپروچ کے باعث پاکستان کشمیر پر سفارتی تنہائی کا شکار ہے،راجہ فاروق حیدر

برمنگھم (کشمیر لنک نیوز) برطانیہ کے دورے پر آئے صدر مسلم لیگ ن آزاد جموں وکشمیر و سابق وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان کے اعزاز میں مسلم لیگ ن آزاد کشمیر مڈلینڈ کے صدر راجہ امجد خان نے اپنی رہائش گاہ پر عشائیہ دیا، تقریب میں سابق وزیر حکومت و ممبر اسمبلی حافظ احمد رضا قادری ، مسلم لیگ ن برطانیہ کے صدر زبیر اقبال کیانی، مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما و سابق ڈی جی کشمیر لبریشن سیل فدا حسین کیانی ، مسلم لیگ ن لوٹن کے رہنما راجہ توصیف کیانی ، کے علاوہ مسلم لیگی رہنمائوں نے شرکت کی۔

بعد ازاں سابق وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر نے لارڈ قربان حسین سے خصوصی ملاقات کی جس میں زبیر اقبال کیانی بھی موجود تھے، راجہ فاروق حیدر نے پاکستان کی موجودہ حکومت کی کشمیر پالیسی پر سخت مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت کی کشمیر پالیسی پاکستان کی قومی پالیسی سے انحراف ہے، بھارت سے غیر اعلانیہ سمجھوتہ ہے، بلکہ کشمیر پر کوئی پالیسی ہے ہی نہیں، انہوں نے مختلف مثالیں دے کر واضح کیا کہ اس وقت پاکستان کشمیر پر سفارتی تنہائی کا شکار ہے جو اس حکومت کی غلط اپروچ کا نتیجہ ہے عرب ممالک اور باقی جو دوست ممالک تھے وہ بھی بھارت کے ساتھ کھڑے ہیں ایسی لیڈر شپ کے ساتھ کوئی کھڑا ہونے کے لیے تیار نہیں۔

سابق وزیراعظم آزاد کشمیر کا مزید کہنا تھا کہ آزاد کشمیر حکومت کا رول متعین کیا جائے بجائے آزاد کشمیر کا سٹیٹس، او آئی سی میں آبزرور کے طور پر متعین کروایا جائے، اور آزاد کشمیر حکومت کو بشمول گلگت پوری ریاست کا نمائندہ تسلیم کیا جائے یہ مہاراجہ ہری سنگھ کی جائز نمائندہ حکومت کے طور پر تسلیم کرکے کشمیر پالیسی کا از سر نو اعادہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری پاکستان کو دھوکہ نہیں دیں گے پاکستان کی کرکٹ ٹیم سے کشمیری لوگوں کا والہانہ پیار ہی دیکھ لیں۔

انہوں نے کہا کہ سانحہ مشرقی پاکستان کے وقت جب پاکستان دو لخت ہو گیا تھا مگر پھر بھی اندرا گاندھی نے کشمیر کا خصوصی سٹیٹس تبدیل نہیں کیا تھا مگر اب پاکستان میں کمزور حکومت ہے، اس لیے بھارت نے کشمیر کی خصوصی حیثیت تبدیل کر دی، پھر ادھر گلگت کو صوبہ بنا کر اچھا کام نہیں کیا گیا، کشمیر پر جس طرح بھارت عالمی معاہدات کا پابند ہے، اسی طرح پاکستان بھی پابند ہے پاکستان نے کشمیر کو اپنے نقشہ میں شامل کر دیا ہے تو اب پاکستان کا فرض ہے کہ وہ اسے دشمن کے قبضے سے چھڑائے۔

50% LikesVS
50% Dislikes