اوورسیز کشمیری ڈائسپورہ کا مسئلہ کشمیر کے حل میں موثر ترین کردار کو ادا کرنے کا وقت آچکا؛ راجہ فاروق حیدر – Kashmir Link London

اوورسیز کشمیری ڈائسپورہ کا مسئلہ کشمیر کے حل میں موثر ترین کردار کو ادا کرنے کا وقت آچکا؛ راجہ فاروق حیدر

نوٹنگھم (کشمیر لنک نیوز) مسلم لیگ ن آزاد جموں وکشمیر کے صدر و سابق وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں ہندوستانی مظالم بڑھتے جا رہے ہیں ہندوستان تیزی کے ساتھ مقبوضہ ریاست میں جابرانہ اقدامات کر رہا ہے،ڈیمو گرافی تبدیل کرنے کے لیے 28لاکھ ہندوستانی شہریوں کو مقبوضہ جموں وکشمیر میں آبادکرنے کے لیے اسٹیٹ سبجیکٹ جاری کر چکا ہے، اگے دس سالوں میں موجودہ کشمیر ڈیموگرافی کے اعتبار سے وہ نہیں ہو گا جو آج ہے، حکومت پاکستان کو معلوم تھا کہ موودی 5 اگست2019 کیا کرنے والا ہے لیکن اس کو روکنے کے لیے عالمی سطح پر کوئی ٹھوس اقدامات نہیں اٹھائے گیے،ہندوستان اس وقت پانچویں بڑی اکانمی ہے اور وہ مغرب کا قدرتی اتحادی ہے، اس کے مقابلے میں کمزور پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان کی فیس ویلیو نہیں ہے، کشمیرکا مسئلہ ہندوستان و پاکستان کے درمیان کوئی سرحدی یا زمینی تنازعہ نہیں یہ ایک قوم کے بنیای حق خودارادیت کا مسئلہ ہے جس کے حصول کی خاطر کشمیری لاکھوں جانوں کی قربانیاں دے چکے ہیں، تمام تر ہندوستانی مظالم کے باوجود ان کی جدو جہد میں کمی نہیں آئی، کشمیریوں کو اب خود آگے بڑھ کر نئے راستے تلاش کرنا ہوں گے جس میں ڈاِئسپورہ کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ آزاد کشمیر حکومت کے کردار کا تعین کرنا ہو گا، تاکہ کشمیری خود اپنا مقدمہ دنیا کے اندر پیش کر سکیں،دنیا کے جمہوری ممالک کی پارلیمنٹس اور انسانی حقوق کے اداروں کو اپنے اپنے نظریات بیان کر کے کنفیوز نہیں کرنا چاہے بلکہ انہیں ہندوستان کا بھیانک چہرہ دکھا کر یہ باور کرانا چاہے کہ کشمیر کا مسئلہ بنیادی حق خودارادیت کا ہے جو اقوام متحدہ کے چارٹر پر موجود ہے جس پر عملدرامد کرنا عالمی قوتوں کی ذمہ داری ہے۔اس کام میں کشمیری ڈائسپورہ پڑھے لکھے نوجوانوں کو شریک کرے اور ان کے ذریعے سوشل میڈیا کے ہتھیار کو استعمال کر کے ہندوستانی بربریت اور جبر و تشدد سے عالمی رائے عامہ اور ذرائع ابلاغ کو آگاہ کیا جائے۔ راجہ محمد فاروق حیدر خان اپنے دورہ برطانیہ کے دوران یہاں مسلم لیگ ن نوٹنگھم برانچ کے زیر اہتمام استقبالیہ تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔جس کی صدات مسلم لیگ ن نوٹنگھم برانچ کے صدرراجہ عجائب خان نے کی جبکہ تقریب سے مسلم لیگ ن برطانیہ کے سینئر نائب صدر چوہدری محمد یونس چھچھیتروی، راجہ مبشرآزاد، کونسلر نگہت، چوہدری راشد، راجہ نثار خان، محمد شفیق کھٹانہ، راجہ عنصر حیات، پروفیسر طارق محمود، کونسلر گلنواز، سابق لارڈ مئیرچوہدری لیاقت، نے خطاب کیا۔

راجہ محمد فاروق حیدر خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر ی ڈائسپورہ اور آزاد کشمیر کو آپس میں مل بیٹھ کر یہ سوچنا ہو گا کہ ہم اپنی آواز کو موثر انداز میں اٹھانے کے لیے کیا حکمت عملی اور نئے اقدامات اٹھا سکتے ہیں، حکومت پاکستان پر ہم بار بار یہ کہہ چکے ہیں کہ آزاد کشمیر حکومت کے کردار تعین کریں، اور کشمیریوں پر اعتماد کریں جو اس مسئلے کے بنیادی فریق ہیں کہ وہ دنیا کے اندر اپنا مقدمہ بہتر اور مضبو ط انداز میں پیش کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہ مسلم لیگ ن کی حکومت نے آزاد خطے کے اندر لوگوں کی عزت و وقار کو قائم کیا، ان کے حقوق حاصل کیے اور ریاست کے تشخص، آزاد خطے کی شناخت پر پہرہ دیا ہے،

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ عمران خان نے اپنے مذموم مقاصد کے لیے آزاد کشمیر میں مسلم لیگ ن کو راستے سے ہٹانے کے لیے تمام غیر آئینی، غیر اخلاقی ہتھکنڈے استعمال کیے اور وزیر اعظم پاکستان کی حیثیت سے آزاد کشمیر کے آئین، قانون اور ضوابط کو طاقت سے بلڈوز کیا۔ آزاد کشمیر کا الیکشن کمیشن ایک وفاقی وزیر کو آزاد کشمیر میں پیسے تقسیم کرنے اور غیر اخلاقی زبان استعمال کرنے پر داخلے کی پابندی لگاتا ہے اور وزیراعظم پاکستان اسے اپنے جہاز میں بٹھا کر آزاد کشمیر لا کر قانون کی دھجیاں بکھیرتا ہے۔ راجہ فاروق حیدر خان نے کہا کہ عمران حکومت کے تمام تر دباؤ اور مداخلت کے باوجود مسلم لیگ ن آزاد جموں کشمیر کی ایک مضبوط سیاسی و نظریاتی قوت ہے جو میاں محمد نواز شریف کی قیادت میں مقبوضہ جموں کشمیر کی آزادی، خطے کی تعمیر و ترقی اور ریاست کے تشخص کے لیے اپنا بھرپور کردار ادا کرتی رہے گی۔ انہوں نے جماعت کے عہدے داران اور کارکنان سے کہا کہ وہ اپنی صفوں میں مکمل اتحاد و یکجہتی کو برقرار رکھتے ہوئے تنظیم کو مظبوط اور فعال بنائیں اور نواز شریف کے بیانیے کے ساتھ مکمل یکجہتی سے کھڑے رہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes