مرکزی جمعیت اہلحدیث برطانیہ کے زیراہتمام سالانہ کانفرنس کا آن لائین انعقاد، کشمیریوں سے مکمل یکجہتی کا اظہار – Kashmir Link London

مرکزی جمعیت اہلحدیث برطانیہ کے زیراہتمام سالانہ کانفرنس کا آن لائین انعقاد، کشمیریوں سے مکمل یکجہتی کا اظہار

برمنگھم (محمد فیاض بشیر) مرکزی جمعیت اہلحدیث برطانیہ کے زیراہتمام سالانہ کانفرنس کا انعقاد کورونا حالات کے باعث آن لائین کیا گیا جس کی صدارت جمعیت کے مرکزی امیر مولانا ابراہیم میر پوری نے کی جبکہ اظہار خیال کرنے والوں میں لارڈ نذیر احمد، مرکزی جمعیت اہلحدیث کے امیر مولانا ساجد میر، صدر آزاد کشمیر سردار مسعود احمد، سیکرٹری جنرل جمعیت اہل حدیث آزاد کشمیر دانیال شہاب مدنی، چیئرمین کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف انٹر نیشنل ریلیشنز الطاف حسین وانی، صدر تحریک کشمیر اسکاٹ لینڈ محمد حنیف راجہ، معروف برطانوی و اسکاٹش سماجی رہنما کلیر بڈویل شامل تھیں۔

اس موقع پر اقوام متحدہ سمیت عالمی طاقتوں سے مطالبہ کیا گیا کہ بھارت کی بڑھتی ریاستی دہشت گردی کا فوری نوٹس لے کر اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق کشمیریوں کو اپنا بنیادی اور پیدائشی حق دیا جائے۔ آرٹیکل370 اور35Aکے خاتمے کو کالعدم قرار دے کر بھارت مقبوضہ کشمیر کی جدگانہ حیثیت برقرار رکھے، تاکہ اس متنازع علاقے میں اقوام متحدہ کی نگرانی میں رائے شماری ممکن ہوسکے۔
صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت، مقبوضہ کشمیر کو ایشیا کا فلسطین بناکر پورے خطے کا امن تباہ کررہا ہے۔ عالمی برادری کی خاموشی سنگین جرم ثابت ہوسکتی ہے۔ اس لیے امن پسند حلقے اپنا کردار ادا کرے، کشمیریوں کو حق خودارادیت دلوائیں۔

https://www.youtube.com/watch?v=U0S9gbgwt6g


لارڈ نذیر احمد نے کہا کہ بھارت عالمی برادری کی پروا کیے بغیر مقبوضہ جموں و کشمیر میں بدترین مظالم ڈھا رہا ہے دیگر مقررین نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں مسلم آبادی کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی گھنائونی سازش پر عمل کیا جارہا ہے۔ روزانہ کی بنیاد پر نوجوانوں کو گرفتار کرکے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ اقوام متحدہ سمیت عالمی طاقتیں بھی خاموش ہیں۔
برمنگھم کی مرکزی جامع مسجد اہل حدیث گولن لائن سے بذریعہ ویڈیو لنک منعقدہ اس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے دیگر مقررین کا کہنا تھا کہ اگر بھارت نے اپنی روش نہ بدلی تو خطے میں ایٹمی جنگ کا امکان پیدا ہوسکتا ہے۔ بھارت کی انتہا پسند حکومت نہ صرف مقبوضہ کشمیر بلکہ پورے ہندوستان میں مسلمانوں کو تشدد اور انتقام کا نشانہ بنا رہی ہے۔

کانفرنس کے اختتام پر مرکزی جمعیت اہل حدیث کی جانب سے جاری اعلامیے میں بھارت کی ایل او سی پر بلااشتعال فائرنگ اور گولہ باری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے مطالبہ کیا کہ وہ بھارتی دہشت گردی اور ہٹ دھرمی کا نوٹس لیں تاکہ خطے میں ایٹمی جنگ کا امکان رد ہوسکے۔ جبکہ اس موقع پر آزاد کشمیر کے وزیراعظم اور صدر کی قیادت میں دونوں اطراف کی قیادت پر مشتمل ایک انقلابی کونسل کے قیام، ریاست جموں و کشمیر کی وحدت کی بحالی اور گلگت و بلتستان میں ریاست باشندہ قانون کو برقرار رکھنے کا بھی مطالبہ کیا گیا جب کہ مزید کہا گیا کہ افواج پاکستان اپنی سرحدوں کے دفاع کے ساتھ ساتھ لائن آف کنٹرول پر بھارتی جارحیت کا جوانمردی سے مقابلہ کررہی ہے۔ جمعیت مسلح افواج پاکستان کو بھرپور تعاون کا یقین دلاتی ہے۔
کانفرنس میں جمعیت اہل حدیث برطانیہ کے مرکزی ناظم اعلیٰ مولانا حافظ حبیب الرحمٰن جہلمی نے نظامت کے فرائض ادا کیے، جبکہ علامہ حافظ حبیب الرحمن، علامہ شیخ شعیب میر پوری، علامہ قاری ذکاء اللہ سلیم اور غلام حاجی افتخار احمد کی نگرانی میں یہ کانفرنس بغیر کسی رکاوٹ کے اخختام پذیر ہوئی۔

50% LikesVS
50% Dislikes