وقت کا تقاضا ہے کہ ہم اپنےعقائد اور اعمال کو مضبوط کریں: پیر سید عرفان مشہدی – Kashmir Link London

وقت کا تقاضا ہے کہ ہم اپنےعقائد اور اعمال کو مضبوط کریں: پیر سید عرفان مشہدی

بریڈفورڈ (محمد فیاض بشیر) آج پوری دنیا میں فتنوں کا راج ہے، اہل فتنہ ہر طرف دندناتے پھر رہے ہیں اور بے چارے سادہ لوح مسلمان ان فتنوں اور فتنہ پروروں سے پریشان راہِ حق کے متلاشی نظر آتے ہیں۔ اس پر فتن دور میں اہلسنت و جماعت ہی ایک ایسی نعمت ہے جو امت مسلمہ اور راہ حق کے متلاشیوں کو کتاب اللہ ،احادیث و سنت رسول اللہ ﷺ ،صحابہ کرامؓ اور ان کا اجماع ،باعمل اور مجتہد فقہائے امت کے اجتہاد و قیاس کی ان چار مضبوط بنیادوں اور دلائل کی روشنی میں ہدایت اور رہنمائی فراہم کرتی ہے۔

ان خیالات کا اظہار سنی جمعیت عوام برطانیہ کے چیئرمین پیر سید محمد عرفان شاہ مشہدی نے پیر سید محمد سلطان حسین شاہ مشہدی کی جانب سے دیئے گئے استقبالیہ کے موقع پر علماء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ استقبالیہ میں برطانیہ بھر سے چالیس سے زائد سادات کرام اور علماءربانین نے شرکت کی، اس موقع پر پیر محمد عرفان شاہ کا مزید کہنا تھا کہ آج وقت کا تقاضا ہے کہ ہم نفرتوں اور آپس کے تفرقوں کو ختم کرنے کے لیے قرآن و حدیث اجماع امت اور قیاس مجتہدین کی اس چھتری تلے جمع ہو کر اپنے عقائد ،اعمال اور اپنے معاملات کو مضبوط کریں۔

پیر محمد عرفان شاہ کا مزید کہنا تھا اللہ کے رسول حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کی محبت اور آپ ﷺکے اہلِ بیت اطہار ،صحابہ کرام کی محبت ہماراایمان کا جزو ہے۔ ہمارے نزدیک آپ ﷺ کی تعظیم اور توقیر کے ساتھ ہی ساتھ آپ کے اہلِ بیت کی تعظیم بھی ضروری ہے۔ آپ ﷺ کی لختِ جگر سیدہ فاطمتہ الزہرا کے مقام و مرتبے کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ سرکارِ دوعالم نے ارشاد فرمایا کہ فاطمہ تمام جہانوں کی عورتوں کی سردار ہےاور میری جان کا حصہ ہیں۔ ہمیں اپنی گفتگو میں ان کی عزت و احترام حضور پاک صلی اللہ وعلیہ وسلم کی نسبت کو پیش نظر رکھ کر خیال رکھنا ہو گا۔

تقریب کے میزبان پیر سید محمد سلطان حسین شاہ مشہدی نے کہا کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے اہلِ بیتِ اطہار، صحابہ کرام،مشائخ اور اولیاء عظام سے محبت و تکریم اہلِ سنت کے شعائر میں شامل ہے ،انہوں نے پیر عرفان شاہ مشہدی کی اہلبیت اطہار اور صحابہ کرام کے ناموس کے تحفظ کے لیے ان کے دلیرانہ کردار کو زبردست خراج عقیدت پیش کیا۔

پیر سید عابد علی شاہ نے کہا کہ اہلبیت اطہار سے محبت کرنا دین، ایمان اور احسان ہے، اور ان سے بغض رکھنا نفاق اور سرکشی ہے، علامہ پیر محمد بشیر طاہر احمد نے کہا کہ آج ہم ایک خطرناک اور نازک دور سے گزر رہے ہیں، ان حالات میں صحابہ کرام کی مثالی زندگی ہمارے لئے مشعل راہ ہے، علامہ قاری عبدالقیوم الفت نوشاہی نے کہا کہ امت مسلمہ آج انتشار کا شکار ہے دینی تعلیمات سے دوری ہمارے لئے مشکلات اور پریشانی کا باعث اور زوال کی وجہ ہے۔ قاری صدام حسین نوشاہی نے کہا کہ ہمیں سیرتِ رسول اور صحابہ کا مطالعہ کرنا چاہیے، ان کی تعلیمات کو اپنا رہنما و مقتدا جان کرمحبت وعقیدت سے ان کی پیروی کرنا چاہیئے۔

تقریب سے مولانا فاضل اظہر ،حافظ محمد طارق ، کونسل آف مساجد لیڈز کے چیئرمین ارشد کھٹانہ ،پیر صوفی اکرم نقشبندی،مسعود احمد قادری ،قاری محمد نواز آف سٹاکٹن ،مولانا شفیق السلام ،علامہ علی اظہر ،قاری اعجاز حسین چشتی ،قاری شہباز ہاشمی ،حاجی محمد رمضان ، حافظ محمد مقصود،مفتی محمد نذیر نقشبندی ،پروفیسر ایاز قریشی ،علامہ محمد افضل نقشبندی ،خلیفہ محمد ارشد ، فیضان عرفانی اور دیگر نے بھی اظہار خیال کیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes