ناروے اور آئس لینڈ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے مسائل کا فوری تدارک ہماری اولین ترجیح ہے، ظہیر پرویزخان – Kashmir Link London

ناروے اور آئس لینڈ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے مسائل کا فوری تدارک ہماری اولین ترجیح ہے، ظہیر پرویزخان

اوسلو (کشمیر لنک نیوز) سفارت خانی پاکستان ناروے تارکین وطن کے مسائل جاننے کیلئے تواتر سے آن لائن کھلی کچہریوں کا انعقاد کررہا ہے، اس سلسلے کی تیسری کچہری میں کمیونٹی شخصیات نے اپنے مسائل سفیر پاکستان کے سامنے رکھے۔

ناروے اور آئس لینڈ میں پاکستان کے سفیر ظہیر پرویزخان نے تیسری آن لائن کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ ناروے اور آئس لینڈ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کی خدمت اور ان کے مسائل کا فوری تدارک ہماری اولین ترجیح ہے۔ سفیرپاکستان ظہیر پرویز خان نے آن لائن کھلی کچہری میں شامل تمام اوورسیز پاکستانیوں کا شکریہ ادا کیا،اس آن لائن کھلی کچہری میں پاکستانی کمیونٹی کے عرفان احمد، طارق شہباز محمدشکیل، چودھری ارشد وحید، سید فواد علی ،عقیل قادر، عثمان غنی اوردیگر نے گہری دلچسپی لی اور اپنے مسائل پیش کیے۔

کھلی کچہری سے ہیڈ آف چانسلری پاکستان ایمبیسی ناروےمس ساراملک نے دوہری شہریت کے حوالے سے انفارمیشن دی اور بتایا کہ حکومت پاکستان کی جانب سے پاکستان اور ناروے کےدرمیان دوہری شہریت کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ہے، ناروے میں مقیم پاکستانی تارکین وطن کے پاس اب اپنی سابقہ پاکستانی قومیت حاصل کرنے یا دوبارہ حاصل کرنے کا اختیار ہے، پاکستانی نارویجن کی مندرجہ ذیل تین کیٹیگریز تشکیل دی گئی ہیں، نمبر ون کیٹیگری جس نے2000سے پہلے نارویجن شہریت کے لیے درخواست دی تھی، نمبر ٹو کیٹیگری جس نے 2000 کے بعد نارویجن شہریت کے لیےدرخواست دی تھی اور نمبر تھری کیٹیگری جس نے یکم جنوری 2020 کے بعد نارویجن شہریت کے لیے درخواست دی تھی۔

انہوں نے مزید بتایا کہ کٹیگریز ون اور ٹو والے افراد کے لئے سب سے پہلے قومی شناختی کارڈ برائے سمندرپار پاکستانی نیکوپ کا حصول لازم ہوگا، کٹیگریز تین والے سمندر پار پاکستانی اپنے شناختی کارڈ کو نیکوپ میں تبدیل کرسکتے ہیں اور پاکستانی پاسپورٹ بنوا سکتے ہیں، میعاد ختم ہونے کی صورت میں پاسپورٹ سفارت خانہ پاکستان سے نیا بنوایا جا سکتا ہے۔

کھلی کچہری میں اوورسیز نارویجن پاکستانیوں نے دوہری شہریت کے حوالے سے شکایات کے انبار لگا دیئے، شکایات کے حوالے سے سفیرپاکستان ظہیر پرویزخان نےجواب دیتے ہوئے کہا کہ اتنے زیادہ لوگ دنیا سے نادرا کارڈ بنوانے کےلیےاپلائی کر رہے ہیں اور پچھلے دس پندرہ سال سے ڈیٹا پروسیسنگ شروع ہوئی ہے اگر آپ اپنےسارے ڈاکومینٹ بھجوائیں گے تو آپ کا ڈیٹافریش سسٹم میں آ جائے گا اور آپ کے لیے کارڈ بنانے میں آسانی ہو گی، آج کے دورمیں سکیورٹی پوائنٹ آف ویو سے ہم ایسے نہیں چھوڑ سکتے کیوں کہ نیکوپ کا مطلب ہے کہ سٹیزن آف پاکستان تو اس لئے ہم سب کو چاہیے کہ ہم اپنی انفارمیشن اور ڈیٹا فریش سسٹم میں جمع کروائیں لیکن اگر معزز اورسیزپاکستانیوں کو کارڈ بنانے کے حوالےسے مشکلات کا سامنا ہے توپاکستان ایمبیسی آپکی ضرور مدد کرے گی۔

ایک اور شکایت پر سفیر پاکستان نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ابھی کچھ عرصہ پہلے دہری شہریت کا نوٹیفکیشن آیا تھا اس لیے ہم نادراسے کہیں گے کہ وہ اپنے سسٹم میں دوہری شہریت کے حوالے سے ناروے کا نام بھی شامل کریں اور انہوں نے یہ بھی کہا کہ جتنے بھی متعلقہ ادارےہیں وہ سب وزارت داخلہ کہ اندر آتے ہیں اس لیے ہم وزارت داخلہ کو اطلاع دیں گے کہ بیس ملکوں کی لسٹ میں وہ 21 ویں ملک ناروے کا نام بھی شامل کریں اور دوہری شہریت کے نوٹیفکیشن کی کاپی نادرا اور متعلقہ محکموں کو بھی بھیجے، کھلی کچہری میں سیدفواد علی نے فیس بک آئی ڈی ہیک کرنے اور ڈپلی کیٹ بنانے کی کمپلین کرتے ہوئے کہا کہ سائبر کرائم کرنے والوں نے ناروےکے اوورسیز پاکستانیوں کے فیس بک اکاونٹ چوری کرنے اور ڈپلی کیٹ فیس بک اکاؤنٹ بنا کران کے رشتے داروں اور دوستوں کوغلط انفارمیشن دے کر پیسوں کا مطالبہ کر کے لوٹنا شروع کر دیا ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes