سفارخانہ پاکستان ویانا کے زیراہتمام (یواین او وی) میں پاکستان کے لوک موسیقاروں کی گروپ پرفارمنس – Kashmir Link London

سفارخانہ پاکستان ویانا کے زیراہتمام (یواین او وی) میں پاکستان کے لوک موسیقاروں کی گروپ پرفارمنس

ویانا (کشمیر لنک نیوز) اس سال اگست میں پاکستان کی آزادی کے 75 سال مکمل ہونے پر دنیا بھر کے سفارت خانوں میں تقریبات کا انعقاد کیا جارہا ہے۔ ایسی تقریبات کا آغاز مختلف ممالک میں قبل از وقت ہی ہوگیا ہے جن میں آسٹریا بھی شامل ہے۔ اس سلسلے میں پاکستان سفارت خانہ ویانا آسٹریا، سلوواکیہ اقوام متحدہ کے لیے’’Tunes of Pakistan‘‘ لے کر آیا ہے۔ دارالحکومت ویانا میں اقوام متحدہ کے دفتر (یو این او وی) میں پاکستان کے لوک موسیقاروں کے ایک گروپ کی پرفارمنس کا اہتمام کیا گیا۔

تقریب میں سرکاری اور نجی شعبے بشمول مقامی حکام، صحافیوں، فنکاروں، سفارتی کور کے ساتھ ساتھ آسٹریا اور سلوواکیہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے اراکین کی نمایاں شرکت تھی۔ پاکستان کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے موسیقاروں میں استاد رئیس احمد (وائلن)، اکبر خمیسو (الغوزہ)، سلمان عادل (بانسری)، گلاب آفریدی (رباب)، اقبال علی (طبلہ)، محمد خان (ڈھولک) اور خالد محمود (پنجابی بنجو) شامل تھے۔

اقوام متحدہ کے دفتر برائے منشیات اور جرائم (UNODC) کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر محترمہ غدہ فتحی اس موقع پر مہمان خصوصی تھیں۔ انہوں نے پاکستان کو اس کے 75ویں یوم آزادی کی تقریبات پر مبارکباد دی اور پائیدار ترقی کے اہداف کے لیے پاکستان کے مسلسل کثیر جہتی وعدوں اور شراکت کا اعتراف کیا۔انہوں نے UNOV میں موسیقی لانے میں مشن کی کوششوں کو سراہا، جس نے پاکستان کے ثقافتی اور روایتی تنوع کو جنم دیا۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سفیر پاکستان آفتاب احمد کھوکھر نے اقوام متحدہ کے ساتھ پاکستان کی ترقی پر بات چیت کی اور مشترکہ اقدار پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ یہ تقریب اس تنوع کا جشن ہے جو پاکستان کی خصوصیت رکھتا ہے جس میں موسیقاروں کے ایک گروپ کو اکٹھا کیا گیا ہے جس کی موسیقی اتحاد، آفاقیت، امن اور خوشحالی کے پیغام پر استوار ہو گی، جن مقاصد کے لیے پاکستان اقوام متحدہ کے رکن کی حیثیت سے پرعزم ہے۔

تقریب پاکستان کے متنوع ثقافتی ورثے کو فروغ دینے اور آسٹریا اور سلوواکیہ میں اس کی روایتی لوک موسیقی کی نمائش کے لیے مشن کی جانب سے ترتیب دیے گئے میوزیکل ایونٹس کی سیریز کا حصہ تھی۔ اس سے پہلے موسیقاروں نے ویانا میں نیشنل لائبریری بریٹیسلاوا میں پریمیٹس پیلس اور انسبرک میں ہاؤس ڈیر میوزک سمیت دیگر معزز مقامات پر پرفارم کیا تھا۔ ان تمام تقریبات نے مقامی سامعین میں بہت پذیرائی حاصل کی، جس میں سرکاری اور نجی شعبے بشمول مقامی حکام، صحافیوں، فنکاروں، سفارتی کور کے ساتھ ساتھ آسٹریا اور سلوواکیہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے اراکین کی نمایاں شرکت تھی۔

50% LikesVS
50% Dislikes