ہم خود اپنی ذات سے بھی اتنا پیار نہیں کرسکتے جتنا رب ہمیں چاہتا ہے؛ اسلامک سیمینار سے ڈاکٹر عدیل کا خطاب – Kashmir Link London

ہم خود اپنی ذات سے بھی اتنا پیار نہیں کرسکتے جتنا رب ہمیں چاہتا ہے؛ اسلامک سیمینار سے ڈاکٹر عدیل کا خطاب

سویڈن (کشمیر لنک نیوز) سٹاک ہومُ کے نواحی علاقےتُمبا(Tumba)میں اوسلو سے آئے ہوئے ڈاکٹر عدیل نے اسلام،اسلامی پس منظر میں بچوں اور نوجوانوں کے مسائل اور روحانیت پر تفصیلی گُفتگو کی-حاضرین کی بڑی تعداد نے اُن کی پر مغز تقریر سے خوب استفادہ کیا-پروگرام کے شروع میں لیاقت علی خاں نے ڈاکٹر عدیل اور انُکی پوری ٹیم کو خوش آمدید کہا۔اور انہیں ہر قسم کے تعاون کا یقین دلایا-انہوں نے شیخ سعید کا شکریہ بھی ادا کیا-جن کے تعاون کے بنا ایسا کامیاب پروگرام کرنا ممکن نہ ہوتا۔

ڈاکٹر محمد عدیل کی آمد سے دارالحکومت اسٹاک ہوم میں اسلامک سیمینار کی ایک منفرد سیریز کا آغاز کیا گیا ہے، جس میں یورپ بھر میں پاکستان سے تعلق رکھنے والے علما و مشائخ سویڈن کے مختلف شہروں میں پاکستانی کمیونٹی کو دینی معلومات و مسائل میں رہنمائی فراہم کریں گے، مذکورہ اسلامک سیمینار کی سیریز کا آغاز معروف سماجی وکاروباری شخصیت سعید شیخ اور لیاقت علی خان کی جانب سے کیا گیا ہے۔

تقریب میں پاکستانی کمیونٹی کے ایک بڑی تعداد جس میں خواتین اور بچوں سمیت ہر عمر کےافرادجبکہ پاکستانی کمیونٹی کی سرکردہ شخصیات، اصغر، زاہد، اسماعیل، ہاشم، فرحان،حسن، مزمل، عمر ، خواجہ مقصود، شہزادہ عثمان، حافظ سجاد اور دیگر شامل تھے، سعید شیخ کا اس موقع پر کہنا تھا کہ ہم سویڈن بھر میں ایک ایسی کمیٹی تشکیل دینے کےخواہاں ہیں جوکسی سیاسی ،مذہبی اور سماجی ادارے کے ماتحت نہ ہو تاکہ ہماری آنے والی نسلوں کو دینی معلومات ایک ایسے پلیٹ فارم سے میسر آسکے جہاں اداروں کے نام پر ہمارے بچے اور نوجوان گروپوں میں تقسیم ہونےکے بجائے متحد ہوکر دیارغیر میں دین اسلام کا پرچار کریں۔

ڈاکٹر عدیل نے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج کا نوجوان مستقبل اور مشکل حالات کی وجہ سے پریشان دکھائی دیتا ہے جبکہ اسلام ایسا مذہب ہے جس میں رہنمائی کے ایسے اصول وضع کئے گئے ہیں جن سے انسان اللّٰہ پر توکل کرکے تمام مسائل کا سامنا بڑی خوش اسلوبی سے کرتا ہے، ان کا کہنا تھا کہ شاید ہم خود اپنی ذات سے بھی اتنا پیار نہیں کرتے جتنا رب ہمیں چاہتا ہے، ہمارے فیصلے ہمارے لئے غلط ثابت ہوسکتے ہیں مگر رب جو ہمارے لئے فیصلہ کرتا ہے وہ دنیا میں بھی ہمارے لئے کامیاب و سرخرو ہونے کی نوید ہیں اور آخرت میں بھی ان فیصلوں سے ہمیں استفادہ حاصل ہوگا۔

50% LikesVS
50% Dislikes