ہسپانوی معیشت کی بہتری میں پاکستانی تارکین وطن نے اہم کردار ادا کیا ہے؛ خیام اکبر – Kashmir Link London

ہسپانوی معیشت کی بہتری میں پاکستانی تارکین وطن نے اہم کردار ادا کیا ہے؛ خیام اکبر

میڈرڈ (کشمیر لنک نیوز) ہسپانوی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کے لئے قائل کرنا اور سپین میں رہتے ہوئے کرونا کی واپس آنے والی لہر کا احتیاطی تدابیر کے ساتھ مقابلہ کرنا جیسے موضوعات پر بات کرنے کے لئے پاکستانی بزنس کمیونٹی کے وفد نے سفیر پاکستان میڈرڈ خیام اکبر اور ہیڈ آف چانسلری دانش محمود سے ملاقات کی۔
وفد کی قیادت چوہدری پرویز تریڑوانوالہ چیئر مین عجوہ گروپ آف بزنس نے کی جبکہ دیگر ارکان میں چوہدری احمد خان تریڑوانوالہ، میاں خان اور میاں جاوید شامل تھے۔
سفیر پاکستان اور ہیڈ آف چانسلری نے آنے والے وفد کو خوش آمدید کہا اور ہائی ٹی کا اہتمام کیا، اس موقع پر سفیر پاکستان نے کہا کہ ہسپانوی سرکاری اداروں میں پاکستانی کمیونٹی کو جفاکش، ایماندار اور محنتی تصور کیا جاتا ہے جو خوش آئند ہے، انہوں نے کہا کہ ویسے بھی ہسپانوی معیشت کی بہتری میں تارکین وطن نے اہم کردار ادا کیا ہے۔
سفیر پاکستان کا کہنا تھا کہ ہسپانوی سرمایہ کار پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے میں دلچسپی لے رہے ہیں اور کندیس سمیت جی ایم ٹریڈ مارک پاکستان جا کر اپنے سٹورز بنا چکے ہیں، ہسپانوی ٹریڈ مارک زارا، ماکسمو دوتی، مانگو، بھی پاکستان میں اپنی مصنوعات بیچ رہے ہیں جبکہ سپین کی بڑی کمپنیاں پاکستان کے ایئر پورٹس اور ریڈار سسٹم، سولر انرجی اور ونڈ انرجی میں کام کر رہی ہیں، سفیر پاکستان کا کہنا تھا کہ سپین میں بزنس سیکٹر پاکستانیوں کی پہچان بن رہا ہے۔
وفد کی قیادت کرنے والے چوہدری پرویز نے کہا کہ ہم نے سپین سے پاکستان جا کر سرمایہ کاری کی ہے جس کا ہمیں خاطر خواہ فائدہ ہوا ہے اور یقیناً اس کا فائدہ پاکستان کی معیشت کو بھی ہو گا، انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنے ارد گرد رہنے والی کمیونٹی کو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کے لئے قائل کرنا چاہیئے اور انہیں بتانا چاہیئے کہ پاکستان ایک پر امن اور دوست شناس ملک ہے۔


اس موقع پر سپین میں کرونا وائرس کی واپس آنے والی لہر کے پیش نظر سفیر پاکستان نے پاکستانی کمیونٹی کے لئے پیغام دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں یہاں کے قوانین اور انتظامی امور کے مطابق مل جل کر کرونا کا مقابلہ کرنا ہے اور وہ مقابلہ یہی ہے کہ ہم بلا وجہ گھر سے نہ نکلیں اور اگر جانا ضروری ہو تو ماسک پہنیں، سوشل فاصلہ رکھیں اور ہاتھوں کو صاف رکھنا ضروری جزو بنا لیں، انہوں نے کہا کہ اوسپتالیت کے کچھ علاقے، یعیدا اور گلاسیا کو دوبارہ سے لاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے اور پچھلے چند دنوں میں 13 سو کے قریب کرونا متاثرین کا اندراج کیا گیا ہے، اس کے ساتھ ساتھ ماسک نہ پہننے والے کو موقع پر جرمانہ بھی کیا جا رہا ہے، انہوں نے کہا کہ سپین میں لاکھوں متاثرین اورکرونا سے وفات پا جانے والے ہزاروں افراد میں پاکستانیوں کی تعداد بہت کم ہے لیکن جس طرح کٹھن حالات میں وفات پا جانے والوں کی میتوں کو پاکستان پہنچانا پڑا وہ بڑا درد ناک مرحلہ تھا کیونکہ پروازیں بند تھیں اور میتوں کو کارگو کے زریعے پاکستان بھیجا گیا، اس لئے ہمیں مزید احتیاط کے ساتھ باقی زندگی بسر کرنا ہو گی کیونکہ اس وباء کی کوئی ویکسین ابھی تک تیار نہیں ہوئی۔

50% LikesVS
50% Dislikes