مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کا سب سے پرانا ایجنڈا ہے جسے کسی لیت و لعل کے بغیر حل ہوجانا چاہیئے – Kashmir Link London

مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کا سب سے پرانا ایجنڈا ہے جسے کسی لیت و لعل کے بغیر حل ہوجانا چاہیئے

اوسلو ( کشمیر لنک نیوز) دنیا بھر کیطرح سکینڈے نیویا کے اہم ملک ناروے میں بھی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے ایک تقریب کا اہتمام کیا گیا۔


یہ تقریب بھارت میں کشمیریوں سے روا رکھے گئے مظالم کے خلاف سے پاکستانی سفارت خانہ اوسلو میں سیمینار کی صورت میں منعقد کی گئی۔ سیمینار میں ناروے میں پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی کے سیاسی، مذہبی اور سول سوسائٹی کے نمائندوں نے شرکت کی۔ مقررین نے اس بات پر زور دیا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل پر سب سے پرانا ایجنڈا ہے جسے اب کسی بھی لیت و لعل کے بغیر حل ہوجانا چاہیئے ورنہ اسکے نتائج اقوام عالم کو بھگتنا ہونگیں۔


سیمینار کے مقررین نے سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کے تحت کشمیریوں کو ان کے جائز حق خودارادیت کی اجازت دینے اور کشمیر میں آزادانہ اور غیرجانبدارانہ رائےشماری کا مطالبہ کیا۔
تقریب سے سفیرپاکستان ظہیر پرویز خان، ناروے جماعت اہلسنت کے امام سید نعمت علی بخاری، پاکستان ایمبیسی کے کمیونٹی ویلفیئر اتاشی خالدمحمود، ہیڈ آفس چانسلری مس زیب طیب،رہنما یو این یوتھ ڈیلیگیٹ نیہا اکرام، پاک ناروےفورم کے صدر سردار وسیم شہزاد اور دیگر نے خطاب کیا۔


سفیر پاکستان ظہیر پرویز خان نے کشمیر حکومت میں جاری ظلم و جبر اورظلم کو روکنے کے لئے حکومت پاکستان کی طرف سے بین الاقوامی سیاسی دباؤ بڑھانے کی کوششوں کو اجاگر کیا۔ انہوں نےزور دے کر کہا کہ سلامتی کونسل نے گذشتہ ایک سال کے دوران مسئلہ کشمیر پر 3 بار مذاکرات کیے تھے اور اقوام متحدہ کے کمشنربرائے انسانی حقوق سمیت متعدد بین الاقوامی تنظیموں کے سربراہوں نے جموں اینڈ کشمیر میں بھارت کی طرف سے بنیادی انسانی حقوق اورلوگوں کے شہری حقوق سے انکار کی مذمت کی تھی۔


سیمینار میں پاکستان پیپلز پارٹی ناروے کےصدر چوہدری جہانگیر نواز، پاکستان ویلفیئر یونین ناروےکے صدر فضل حسین ، مسلم لیگ ق کے صدر چوہدری شبیر حسین ،پی ٹی آئی ناروے کے صدر چوہدری طاہراکرم، سینئر سیاسی رہنما شاہد جمیل، سید رضوان احمد اور دیگر نے شرکت کی۔

50% LikesVS
50% Dislikes