پشتون آرگنائزیشن یورپ کے زیراہتمام سیمینار، کشمیریوں سے مکمل یکجہتی کا اظہار – Kashmir Link London

پشتون آرگنائزیشن یورپ کے زیراہتمام سیمینار، کشمیریوں سے مکمل یکجہتی کا اظہار

برسلز (کشمیر لنک نیوز) پشتون آرگنائزیشن یورپ کے زیراہتمام بھارتی حکومت کے غاصبانہ اقدامات کے خلاف ایک سیمینار کا انعقاد کیا گیا جس میں کرونا کے ایس او پیز کی پابندی کرتے ہوئے ممبران نے شرکت کی۔
اس موقع پر پشتون آرگنائزیشن یورپ کے صدر عرب گل ملاگوری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ ستر سالوں سے وادی میں انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیاں ہورہی ہیں جو انتہائی قابل افسوس اور انسانی حقوق کی تنظیموں کے منہ پر طمانچہ ہے۔ ہم حکومت پاکستان کی کشمیریوں کے حق میں اس جدوجہد میں ان کے ساتھ ھیں اور ان کے حقوق کی بحالی تک چین سے نہیں بیٹھیں گے انہوں نے مزید کہا کہ فرانس نے طرح حکومتی سطح پر پوری دنیا کے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کیا ھے ھم اس کی بھی پر زور مذمت کرتے ہیں۔

عرب گل ملاگوری نے مزید کہا کہ کورونا وائرس کی دوسری شدید لہر کے باوجود ہم کشمیری بہن، بھائیوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرنے کے لیے اکٹھے ہوکر اپنے مشترکہ پیغام سے دنیا بھر میں یہ بتانا چاہتے ہیں کہ ہم کشمیریوں کو کبھی بھی تنہا نہ چھوڑیں گے اور ہر فورم پر بھارتی مظالم کیخلاف آواز بلند کرتے رہے ہیں۔

پشتون آرگنائزیشن یورپ کے چیئرمین نوید خان نے کہا کہ بھارت کے چہرے پر لگے دہرے نقاب کو دنیا جان چکی ہے، کیونکہ بھارت مظلوم کشمیریوں کا خون بہاکر وادی پر زبردستی قابض ہے، انہوں نے کہا کہ کسی کو بھی وادی میں آنے جانے کی اجازت نہیں ہے،حتیٰ کہ انٹر نیٹ سروس کو معطل طبی سہولیات کی عدم دستیابی اور صنعتی مراکز اور اسکول، کالجز کی بندش سے نئی نسل کو پھلنے پھولنے سے روکا جارہا ہے اور وادی میں بنیادی سہولیات کی عدم فراہمی سے تحریک حریت کو کچلنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

پشتون آرگنائزیشن بیلجیم کے صدر جمیل خان نے کہا کہ ہم یوم سیاہ کے موقع پر بھارتی مظالم کی پُرزور الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کشمیریوں کے صبر کو آزمانا بند کردے، انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی برادری کو چاہیے کہ وہ بھارت کو وادی کے اندر ظلم و ستم کو بند کرانے اور کشمیری قوم کے حقوق اور حق خودارادیت دلانے کیلئے انہیں وادی کے اندر آزادی کے ساتھ رہنے کیلئےبھارت پر دبائو ڈالے۔
سیمینار میں پشتون کمیونٹی کی سرکردہ شخصیات نے اس عزم کا اظہار کیا کہ مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے، اس پر خاموشی کشمیری عوام کے حقوق اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے مترادف ہے۔ شرکا نے مودی حکومت اور آر ایس ایس کے گھنائونے مظالم پر شیم شیم کے نعرے بھی لگائے۔

50% LikesVS
50% Dislikes