پاکستانی نژاد جرمن سائینسدان ڈاکٹر آصفہ اختر نے جدید تحقیق پر 2021 لائبنٹس ایوارڈ جیت لیا – Kashmir Link London

پاکستانی نژاد جرمن سائینسدان ڈاکٹر آصفہ اختر نے جدید تحقیق پر 2021 لائبنٹس ایوارڈ جیت لیا

فرینکفرٹ (عدیل خان) بیرون ممالک کے اعلیٰ تعلیم یافتہ پاکستانیوں نے ویسے تو ہر شعبہ ہائے زندگی میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا ہے تاہم گذشتہ کچھ عرصے سے تحقیق کے شعبے میں بھی بہت سے اوورسیز پاکستانیوں نے اعزازات حاصل کیئے ہیں، ڈاکٹر آصفہ اختر بھی ان میں سے ایک ہیں۔
جرمنی کی معروف تحقیقی سوسائٹی ماکس پلانک سے منسلک پاکستانی نژاد آصفہ اختر کو 2021 کے لائبنٹس ایوارڈ سے نوازا گیا ہے۔ یہ جرمنی میں سائنسی تحقیق کا اعلیٰ ترین ایوارڈ مانا جاتا ہے۔

پاکستان کے شہر کراچی میں 1971 میں پیدا ہونے والی ڈاکٹر آصفہ اختر نے سن 1997 میں امپیریئل کینسر ریسرچ فنڈ لندن میں پی ایچ ڈی مکمل کی۔ انہوں نے 1998 سے 2001 کے دوران جرمن شہر ہائیڈل برگ میں قائم یورپین مالیکیولر بائیولوجی لیبارٹری (ای ایم بی ایل) اور میونخ میں واقع اڈولف بوٹینانٹ انسٹیٹیوٹ میں اپنی پوسٹ ڈاکٹوریل فیلوشپ مکمل کی۔

ڈاکٹر آصفہ اختر 2013 سے جرمن شہر فرائبرگ میں ماکس پلانک انسٹیٹیوٹ برائے ایمیون بائیولوجی اور ایپی جینیٹکس میں ڈائریکٹر کے عہدے پر فائض ہیں۔ رواں سال یکم جولائی سے انہوں نے ماکس پلانک سوسائٹی کے انتہائی اہم عہدے کی ذمہ داریاں سنبھالی تھیں۔

ڈاکٹر آصفہ اپنی جدید ترین تحقیق کی وجہ سے غیر معمولی شہرت حاصل کر چُکی ہیں۔ انہیں ایپی جینیٹکس، جین ریگولیشن اور بنیادی حیاتیاتی سیل پر نت نئے تجربات کرنے اور ان کی مدد سے انتہائی اہمیت کی حامل نئی معلومات منظر عام پر لانے کا کام انجام دینے پر اس گراں قدر انعام سے نوازا جا رہا ہے۔
لائبنٹس ایوارڈ کی تقسیم کی تقریب 15 مارچ 2021 کو ڈجیٹل انداز میں منعقد ہو گی۔

اپنی اس کامیابی پر ڈاکٹر آصفہ اختر کا کہنا تھا کہ یہ ایوارڈ میرے لیے انتہائی اعزاز کی بات ہے۔ میں اپنی لیب کے سابقہ اور موجودہ اراکین اور ٹیم ممبران کی خاص طور سے شکر گزار ہوں۔ ان کی کمنٹمنٹ اور محنت نے ہمارے لیے اس ایوارڈ کے حصول کو ممکن بنایا۔

50% LikesVS
50% Dislikes