بھارت نے ہمیشہ کشمیریوں کے حوصلے پست کرنے کی کوشش کی لیکن یہ قوم آج بھی ڈٹی ہوئی ہے؛ راجہ نجابت حسین – Kashmir Link London

بھارت نے ہمیشہ کشمیریوں کے حوصلے پست کرنے کی کوشش کی لیکن یہ قوم آج بھی ڈٹی ہوئی ہے؛ راجہ نجابت حسین

مانچسٹر ( محمد فیاض بشیر) یوم یکجہتی کشمیر کے سلسلے میں جموں وکشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام ایک بین الاقوامی کشمیر پارلیمنٹری کانفرنس کا انعقاد ، یکجہتی کشمیر مہم کے سلسلہ میں دوسری انٹر نیشنل کشمیر پارلیمنٹری کانفرنس یوتھ پارلیمنٹ پاکستان کے اشتراک سے کیا گیا ۔ انٹر نیشنل کشمیر پارلیمنٹری کانفرنس کے مہمان خصوصی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی تھے ۔ جبکہ کانفرنس میں پارلیمانی کشمیری کمیٹی کے چیئرمین ایم این اے شہریار خان آفریدی کے علاوہ ممبران قومی اسمبلی ، سینیٹرز اور برطانوی پارلیمنٹ کے ارکان ، سابق سفارتکار ،بین الاقوامی مندوبین ، انسانی حقوق کے رہنمائوں نے خصوصی شرکت کی۔

اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کر رہا ہے ۔ کشمیر میں انسانی حقوق مکمل معطل ہیں ۔ بھارت نے کشمیریوں کی آزادی سلب کر رکھی ہے ۔ جرات و بہادری کی مثال کشمیریوں نے جان کے نذرانے تو پیش کیے لیکن اپنے اصولی مؤقف حق خود ارادیت کے حصول پر سمجھوتہ نہیں کیا۔ مودی نے 5اگست کا اقدام اٹھا کر حریت و آزادی کی آواز کو کچل دے گا لیکن کشمیریوں نے ثابت کیا کہ کوئی بھی کشمیریوں کے جذبے اور سر کو کچل نہیں سکتا۔ 73سال کے ظلم و بربریت کے باوجود کشمیری اپنی جدو جہد سے پیچھے نہیں ہٹے۔ وزیر خارجہ کا کہنا تھا بین الاقوامی مندوبین اور انٹرنیشنل میڈیا کو دعوت دیتاہوں کہ آزاد کشمیر آئیں لیکن بھارت بھی انٹرنیشنل میڈیا کو مقبوضہ وادی اور سری نگر جانے کی اجازت دے۔

انسٹی ٹیوٹ آف اسٹریٹجک اسٹڈیز اسلام آباد ISSI میں منعقدہ انٹر نیشنل کشمیر پارلیمنٹری کانفرنس کی صدارت معروف کشمیری رہنماء چیئرمین تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل راجہ نجابت حسین نے کی۔ ادارے کے ڈائریکٹر جنرل سابق سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چودھری نے میزبانی کی ۔تقریب کے منتظم صدر یوتھ پارلیمنٹ آف پاکستان عبید الرحمن قریشی تھے۔


اس انٹر نیشنل پارلیمنٹری کانفرنس سے چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار خان آفریدی ایم این اے ،پاکستان ریڈ کریسنٹ اور یوتھ پارلیمنٹ آف پاکستان کے چیئرمین ابرار الحق ،وفاقی پارلیمانی سیکرٹری برائے خزانہ مخدوم زین حسین قریشی ،سینیٹ میں پاکستان پیپلز پارٹی کی پارلیمانی لیڈر سینیٹر شیری رحمان ،برطانیہ سے آل پارٹیز کشمیر پارلیمنٹری گروپ کی چیئرپرسن ایم پی ڈیبی ابراھم ، لیبر فرینڈز آف کشمیر کے چیئرمین ایم پی اینڈریو گوائن ، شریک چیئر کنزرویٹو فرینڈز آف کشمیر ایم پی پال برسٹو ، شریک چیئر کنزرویٹو فرینڈز آف کشمیر ایم پی جیمز ڈیلی،سکریٹری کشمیر پارلیمنٹری گروپ لارڈ قربان حسین ، کنوینر لیبر فرینڈز آف کشمیر لارڈ واجد خان ،ایم پی بیرسٹر یاسمین قریشی ،ایم پی ٹونی لائیڈ ،ایم پی جیوڈتھ کمنز،سابق شیڈو ایجوکیشن سکریٹری ایم پی ربیکا لانگ بیلی،سابق شیڈو چانسلر ایم پی رچرڈ برگن ، شیڈو ڈپٹی لیڈر آف ہاس آف کامنز ایم پی افضل خان ، ایم پی سارہ اوون،ایم پی ریچل ہوپکنز، سکاٹش سے تعلق رکھنے والی ایم پی ایلیسن تھیلس ، یورپین پارلیمنٹ میں سابق چیئرپرسن فرینڈز آف کشمیرانتھیا میکانٹیئر، سابق ممبر یورپی پارلیمنٹ فلپ بینین ،سابق ممبر یورپی پارلیمنٹ امجد بشیر ،سابق ممبر یورپی پارلیمنٹ جولی وارڈ کے علاوہ یہاں کشمیر سے سیکرٹری جنرل حریت کانفرنس آزادکشمیر چیپٹرپرویز احمد ایڈووکیٹ ، حریت رہنماء سید اعجاز احمد رحمانی ،حریت رہنماء راجہ خادم شاہین ، تحریک حق خود ارادیت برطانیہ کی چیئرپرسن کونسلر یاسمین ڈار، تحریک حق خود ارادیت یوتھ کے چیئرمین ذیشان عارف ،تحریک حق خود ارادیت سائوتھ ویسٹ آف انگلینڈ کے چیئرمین راجہ محمد عارف خان ، تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے سیکرٹری جنرل محمد اعظم، صدر یوتھ پارلیمنٹ پاکستان عبیدالرحمن قریشی ، قومی گلوکار برائے کشمیر زوہیب زمان ، آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس کے رہنما چودھری جمیل تبسم ، عبدالقادر چیئرمین یوتھ ایسوسی ایشن آف پاکستان ، محترمہ مریم ادریس ، ڈاکٹر سعدیہ خان ، مس کنول حیات ، ریحانہ یاسمین ، مس آسیہ حسین پی ٹی آئی برطانیہ ، سیاسی و سماجی رہنماء چودھری محمد شبیر ، محمد راشد چوہدری اور یوتھ پارلیمنٹ کی ٹیم کے علاوہ پاکستانی پالیسی سازوں ،کشمیری کارکنوں اور یوتھ پارلیمنٹ کے ممبروں نے شرکت کی۔

اس موقع پر مقررین کا کہنا تھا کہ ہندوستانی حکومت کی طرف سے آرٹیکل 370 کے خاتمے اور اس سے متعلق دیگر ترامیم کے بعد سے ثقافتی اور آبادیاتی دہشت گردی کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹیرینز اور دیگر متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کو شامل کرنے کی ضرورت تھی کیونکہ جمہوریت میں پارلیمان ہی عوام کی آواز ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کثیرالجہتی معاملے کے ضامن کے طور پر ہم نا صرف قومی بلکہ بین الاقوامی سطح پر ہر طبقہ ہائے زندگی اور پروفیشنلز سے رابطوں کی کوشش کر رہے ہیں ۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کے ذریعہ بربریت کی جارہی ہے ، اقوام متحدہ اور عالمی برادری کے لئے یہ ایک آزمائشی کیس ہے۔

جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے چیئرمین و صدر کانفرنس راجہ نجابت حسین نے شرکاء کو کشمیر کی تازہ صورتحال اور اس کے حوالے سے سفارتی محاذ پر ہونے والی کوششوں اور پاکستان میں ممکنہ اقدامات پر تفصیلی بریفنگ دی ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کی کوشش ہے کہ جبر سے کشمیریوں کے حوصلے پست ہوجائیں لیکن بھارتی جبر کے آگے کشمیریوں نے ڈٹ کر جدو جہد کی۔ کشمیریوں کی قربانیوں اور جرات پر انہیں سلام پیش کرتے ہیں۔ کشمیری قید ہیں، میڈیا اور اسکولوں تک رسائی نہیں، کشمیر میں مذہبی پابندی بھی ہے، بھارت کے پورے ظلم کو آج دنیا دیکھ رہی ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes