چیف جسٹس آزادکشمیر ہائی کورٹ جسٹس شیراز کیانی ریاست کا انمول اثاثہ تھے؛ راجہ ایاز خان – Kashmir Link London

چیف جسٹس آزادکشمیر ہائی کورٹ جسٹس شیراز کیانی ریاست کا انمول اثاثہ تھے؛ راجہ ایاز خان

لندن (شیراز خان) چیف جسٹس آزادکشمیر ہائی کورٹ کو ہزاروں سوگواروں نے ڈڈیال حویلی آزاد کشمیر میں سپرد خاک کردیا گیا، مرحوم ایک منجھے ہوئے اچھی شہرت کے حامل جج اور ماہر قانون تھے، برطانیہ بھر سے کمیونٹی شخصیات نے انکی اچانک رحلت پر گہرے دکھ اور غم کا اظہار کیا ہے۔
چیف جسٹس شیراز کیانی نے 24 مارچ کو چیف جسٹس کے عہدے کا حلف آٹھایا تھا اور اسی روز رات گیارہ بجے ان کے خون کے پلیٹلٹس کم ہونے کی وجہ سے ان کو اسلام آباد کے شفا انٹرنیشنل ہسپتال میں داخل کیا گیا تھا اور ڈاکٹروں نے انکا اپریشن کیا تھا وہ ہسپتال میں ہی پانچ ہفتے زیر علاج رہے کہ گزشتہ پیر کے روز صبح وہ اپنے خالق حقیقی سے جا ملے۔

چیف جسٹس شیراز کیانی کے جنازے میں آزاد کشمیر کے سابقہ اور حاضر ججز وکلاء مذہبی سیاسی جماعتوں کے قائدین اور سول سوسائٹی کے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔
برطانیہ میں مقیم مرحوم کے دیرینہ قریبی دوست راجہ ایاز خان ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ اللہ تعالیٰ کے اپنے فیصلے ہوتے ہیں چیف جسٹس کی موت سے عدالتی نظام میں بہت بڑا خلا پیدا ہوا ہے ایسے لوگ کم ہی پیدا ہوتے ہیں جو دیانت اور امانت داری سے اپنے فرائض منصبی سرانجام دیتے ہوں شیراز کیانی کی وفات پر آزاد کشمیر پاکستان اور اورسیزز میں آباد پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی نے بڑے پیمانے پر اظہار افسوس کیا ہے اس موقع پر سوگوار خاندان کی جانب سے دعائے مغفرت کی اپیل کی گئی ہے چیف جسٹس شیراز کیانی نے پسماندگان میں بیوہ، تین بیٹے اور ایک دس سالہ بیٹی چھوڑی ہے جبکہ ان کے والدین بھی حیات ہیں اللہ تعالیٰ مغفرت فرمائے آمین۔

50% LikesVS
50% Dislikes