لندن میں کورونا وائرس کی شرح تشویشناک حد تک بڑھ چکی ہے؛ قومی ادارہ شماریات کا انکشاف – Kashmir Link London
Covid19

لندن میں کورونا وائرس کی شرح تشویشناک حد تک بڑھ چکی ہے؛ قومی ادارہ شماریات کا انکشاف

لندن (عمران راجہ) انگلینڈ میں مزید سخت لاک ڈائون کے بعد عوام میں خوف کی لہر کو محسوس کیا جانے لگا ہے، عوام ناصرف بے جا آوارہ گردی سے بچ رہے ہیں بلکہ ویکسین لگوانے کی فکر میں جڑ چکے ہیں۔

وزیراعظم بورس جانسن نے عوام کو امید دلائی ہے کہ انہیں وسائل سے بڑھ کر تگ و دو کیساتھ ویکسین لگانے کا عمل جاری رہے گا، انہوں نے عوام سے اپیل بھی کی کہ وہ اس سلسلے میں این ایچ ایس کے عملے سے بھرپور تعاون کریں۔ بورسجانسن کا اپنے تازہ ترین پیغام میں کہنا تھا کہ ملک بھر میں اب تل تہرہ لاکھ سے زائد لوگ کورونا ویکسین سے مستفید ہوچکے ہیں۔

واضع رہے برطانیہ کی مقامی تیارکردہ ویکسین کے لگانے کا عمل بھی شروع ہوچکا ہے۔ آکسفورڈ یونیورسٹی کی تیار کردہ ویکسین کی پہلی ڈوز 82 سالہ برطانوی شہری کو لگائی گئی۔

برطانوی ہیلتھ سیکریٹری نے اس پیش رفت کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ برطانیہ کی کرونا وبا کے خلاف جنگ کامیابی کی منزل کی طرف بڑھ رہی ہے اور بہت جلد حفاظتی پابندیوں سے چھٹکارا مل جائے گا۔
فی الحال آکسفورڈ ایسٹرا زینیکا ویکسین برطانیہ کے 6 ہیلتھ ٹرسٹس میں لگائی جارہی ہے جن میں آکسفورڈ، لندن، سسیکس، لنکا شائر اور وارک شائر شامل ہیں۔

اس ویکسین کی خصوصیت یہ ہے کہ یہ کووڈ کے پھیلاؤ کو کم کرنے کے ساتھ بیماری اور موت سے بھی تحفظ فراہم کرسکے گی۔

دوسری جانب ایک میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دارالحکومت لندن میں ہنگامی بنیادوں پر اس ویکسین کو لگانے کی ضرورت ہے، قومی ادارہ شماریات کی ایک تازہ ترین رپورٹ کے مطابق لندن میں ہر تیس میں سے ایک فرد وائرس کا شکار ہے جو کہ انتہائی تشویش کن امر ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes