برطانیہ میں کورونا ویکسین لگانے کا عمل کامیابی سے جاری، بیرونی مسافروں کیلئے سخت پابندیوں کا اطلاق – Kashmir Link London

برطانیہ میں کورونا ویکسین لگانے کا عمل کامیابی سے جاری، بیرونی مسافروں کیلئے سخت پابندیوں کا اطلاق

لندن (عمران راجہ) برطانیہ میں کورونا وائرس کی نئی خطرناک اقسام کو روکنے کیلئے سخت پابندیاں متعارف کرا دی گئی ہیں، جن پر عمل نہ کرنے والے مسافروں کو 10 برس جیل کی سزا کے علاوہ 10 ہزار پونڈ تک جرمانہ بھی کیا جاسکے گا۔ ۔

دوسری جانب برطانیہ میں کورونا ویکسین لگائے جانے کا عمل گو سست روی کا شکار ہے تاہم اس سلسلے میں تمام تر حفاظتی امور کو مدنظر رکھا جارہا ہے ویکسین ٹاسک فورس کے برطانوی چیف ڈاکٹر کلائیوڈکس کا کہنا ہے کہ اس سال مئی تک پچاس سال کی عمر کے تمام افراد کو ویکسین لگائی جاچکی ہوگی۔

میڈیا سے گفتگو میں انکا کہنا تھا کہ برطانیہ کورونا وائرس کی تمام اشکال سے نبٹنے میں سب سے آگے ہوگا۔ انکا کہنا تھا کہ ہم مستقبل میں اس دبائو سے نمٹنے کیلئے ویکسین کی لائبریریاں بنارہے ہیں تاکہ جب ضرورت ہو تو جلد کلینیکل اسٹڈی کی جاسکے گی کہ کون سی ویکسین کارآمد ہے جس کے بعد اس کی تیاری شروع کردی جائے گی۔

قبل ازیں پرائم منسٹر ہائوس بھی مئی تک50 برس سے زائد عمر کے تمام افراد کو ویکسین لگانے کی پیشکش کا اعلان کرچکا ہے۔ ڈاکٹر ڈکس کا کہنا تھا کہ حکومت 15فروری تک15ملین افراد کو ویکسین لگانے کا ہدف حاصل کرنا چاہتی ہے۔

دریں اثنا حکومت نے باہر سے آنے والے مسافروں کیلئے بھی نئی پابندیاں متعارف کرادی ہیں جنکے تحت آئیندہ پیر سے برطانیہ آنے والوں کو قرنطینہ کے دوران دو پی سی آر کورونا ٹیسٹ کرانا ہونگے، ایک آنے کے بعد دوسرے دن اور دوسرا آٹھویں روز کرانا ہوگا۔ 33ممالک کی ریڈلسٹ سے آنے والے مسافروں کو 10دن قرنطینہ کی مدت ہوٹل میں گزارنا ہوگی جس کیلئے مسافروں کو آنے سے قبل ہوٹل ٹرانسپورٹ اور ٹیسٹ کی بکنگ کرانا ہوگی۔ جس کے اخراجات 1750 پونڈ ہونگے۔

انہوں نے کہا کہ برطانیہ نے جنوبی افریقہ اور برازیل سے آنے والے وائرسز کی نشاندہی کی اور برطانیہ ان وائرسز کی ہیئت کی تبدیلی سے متعلق آگاہی فراہم کرنے میں بھی سب سے آگے ہے اور وہ وائرسز کے خلاف ویکسین تیار کرنے کی صلاحیت بھی رکھتا ہے۔
ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ تمام تحقیق اور صلاحیتیں صرف برطانیہ کیلئے نہیں بلکہ ان کا اطلاق دنیا بھر کیلئے ہوگا۔

50% LikesVS
50% Dislikes