بلیک اینڈ ایشین خواتین میں ترجیحی بنیادوں پر کورونا ویکسین کی افادیت اجاگر کرنے کی ضرورت ہے: افضل خان ایم پی – Kashmir Link London

بلیک اینڈ ایشین خواتین میں ترجیحی بنیادوں پر کورونا ویکسین کی افادیت اجاگر کرنے کی ضرورت ہے: افضل خان ایم پی

مانچسٹر(محمد فیاض بشیر) لیبر پارٹی کے ڈپٹی اپوزیشن راہنما محمد افضل خان کی جانب سے بیم کمیونٹی کی خواتین کو ویکسن لگانے کے حوالے سے ذوم میٹینگ کا انعقاد کیا گیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے رکن پارلیمنٹ افضل خان نے کہا کہ گریٹر مانچسٹر میں اندازہ کے مطابق اقلیتی کمیونٹیز کی خواتین ویکسین لگانے میں سب سے کم تعداد ہیں جو قابل تشویش ہیں،انہوں نے کہا کہ کروانا وائرس ایک موضی بیماری ھے جس کے نیتجے میں کم ازکم موت ھے،وبا سے بچنے کے لیے ماہرین نے گزشتہ ایک سال میں دن رات ایک کرکے ویکسین تیار کی ہیں جو وائرس سے محفوظ بناتی ھے۔

میٹینگ کے شرکا کا کہنا تھا کہ مسلم خواتین کوویڈ 19 کی ویکسین مسلمان مردوں کے مقابلے میں کم ہی ملتی ہے جہنوں نے ویکسین کی خوراک حاصل کی ہیں یہ ایک لمحہ فکریہ ہے کہ کچھ برادریوں میں یہ فرق 10 فیصد تک رہ گیا ہےہمیں اس بات پر تشویش ھےکہ اگر خواتین ویکسن لگانے میں ناکام رہی تو خاندانوں میں وبا تیزی سے پھیلے گی کیونکہ کمیونٹی کا داروں مدار گھروں پر یعنی خواتین پر ہے اس لیے کروانا وائرس سے نمٹنے کے لیے ضروری ہے کہ ھم اپنی زمہ داری کا ثبوت دیتے ھوئے ویکسین لگانے میں پہل کریں اور اپنے اپ اور فیملی کو محفوظ کریں۔

اس اہم ایشو پر ہونے والی زوم میٹنگ کے شرکا میں رکن برطانوی پارلیمنٹ ڈاکٹر روزینہ آلین خان،اسلامی اسکالر نوشین گل،کونسلر امنہ عبدل،ڈاکٹر حنا صدیقی،ذمذم ابراھیم،مقدسہ بانو،سلطانیہ سلیم،ڈاکٹر شیرین سبحانی،حفصہ اشرف،سارہ قریشی شامل تھیں۔

شرکا کا کہنا تھا کہ پوری دنیا میں کرونا وائرس سے لاکھوں افراد ھلاک ھوئے اور تبائی ھوئی اس اندازہ لگانا انتہائی مشکل کام ہیں مگر سائینس دانوں نے انتہائی تگ و دو کے بعد ویکسین تیار کی ہے بحثیت قوم ہر بندہ اپنی ذمہ داری کا ثبوت دے اور باالخصوص بلیک و ایشین اقلیتی کمیونٹی کی خواتین کو ویکسین لگانے کے احوالے سے مہم چلائے تاکہ وہ اپنے بچوں اور خاندان کو محفوظ بناسکیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes