نا اِدھر کے نا اُدھر کے، برٹش پاکستانی برطانیہ اور پاکستان کی حکومتوں کے رویئے پرچیخ اٹھے – Kashmir Link London

نا اِدھر کے نا اُدھر کے، برٹش پاکستانی برطانیہ اور پاکستان کی حکومتوں کے رویئے پرچیخ اٹھے

لندن (عمران راجہ) برطانیہ کی جانب سے پاکستان کو کورونا کے باعث ریڈ لسٹ میں ڈالنے سے پاکستان آئے ہوئے ہزاروں برٹش پاکستانی پھنس گئے۔ وقت کم ہونے کی وجہ سے پاکستان میں ان سے واپسی کیلئے منہ مانگے کرائے وصول کیئے جارہے ہیں۔ جب کہ مقررہ وقت پر برطانیہ نہ پہنچنے کی صورت میں ڈھیروں پابندیاں اور جرمانے انکے منتظر ہیں۔

نو اپریل کی صبح چار بجے کے بعد برطانیہ واپس پہنچنے والے برطانوی شہریوں کو قرنطینہ کی مد میں پاکستانی چار لاکھ سے زائد جمع کرانا ہوں گے جبکہ آٹھ اپریل تک برطانیہ جانے والی تمام پروازیں مکمل طور پر بکڈ ہیں پاکستان سے برطانیہ کے لئے ایک طرفہ ٹکٹ کے نرخ بھی سات لاکھ روپے پاکستانی تک پہنچ گئے برطانیہ اور پاکستان کے درمیان سفر کے لیے صرف پی آئی اے، برٹش ائرویز، کویت اور گلف ایئر لائنز کو ہی آپریٹ کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔

پی آئی اے کے بیڑے میں بھی چھوٹے جہاز مانچسٹر تک پرواز کر رہے ہیں جبکہ برٹش ائر ویز نے بھی پاکستان کے لئےجمبو کی بجائے ائربس سروس شروع کر رکھی ہے جس سے ہزاروں پاکستانی نژاد شہری چھٹیاں گزارنے آنے والوں کی واپسی میں شدید مشکلات لاحق ہیں۔ ایسے میں ممبران پارلیمنٹ سمیت متعدد اہم شخصیات نے دونوں حکومتوں سے اپیل کی ہے کہ وہ مشکلات میں گھرے عوام کی مدد کریں۔

تمام ائیر لائنز میں ٹکٹوں کا حصول ایک خواب بن گیا لوگ بھاری رقمیں اٹھائے ٹکٹ کے لئے مارے مارے پھر رہے ہیں اس کے لئے وہ اسلام آباد ہی نہیں پشاور لاہور سیالکوٹ اور کراچی کے ساتھ ساتھ کویت اور بحرین کے راستے برطانیہ واپسی کے لئے کوشاں ہیں کلرسیداں کے دیہات میں بھی بھاری تعداد میں ایسے لوگ موجود ہیں جو برطانیہ واپسی کے لئے کوشاں ہیں اور ان فیملیز کے چھ سے پندرہ تک لوگ پاکستان میں موجود ہیں جنہیں تاخیر سے پہنچنے پر برطانیہ میں تیس ہزار پاؤنڈز تک ادا کرنا پڑیں گے۔

ادھر بیرون ملک جانے والے مسافروں کی اسلام آباد ائرپورٹ پر بھی طویل قطاریں لگی ہوئی ہیں جس کے باعث مسافر ائرپورٹ پہنچ کر بھی مقررہ وقت پر عمارت کے اندر داخل نہیں ہو رہے جس کے لئے انہیں بھی عملے کی دو ہزار فی کس مٹھی گرم کرنا پڑتی ہے جس کے بعد انہیں عملے کے زیر استعمال گیٹ سے اندر لے جایا جاتا ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes