لندن کے ریسٹورنٹ میں کھانے کے دوران عابد شیر علی اور ایک خاندان میں شدید تکرار – Kashmir Link London

لندن کے ریسٹورنٹ میں کھانے کے دوران عابد شیر علی اور ایک خاندان میں شدید تکرار

لندن (کشمیر لنک نیوز) لندن کے ایک ریسٹورنٹ میں سابق وفاقی وزیر ن لیگی رہنما عابد شیر علی اورایک پاکستانی نژاد خاندان میں تکرار ہوگئی۔ ریسٹورنٹ اس موقع پر گاہکوں سے کھچا کھچ بھرا ہوا تھا۔

عابد شیر علی نے واقعے سے متعلق کہا کہ وہ ہوٹل میں کھانا کھارہے تھے کہ یہ فیملی آئی اورانہیں خوامخواہ برا بھلا کہنے لگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ فیملی نے ہمیں کہا کہ آپ لوٹی دولت سے کھانا کھارہے ہیں، اس پر تکرار ہوئی۔

مخالف فیملی نے موقف اختیار کیا کہ عابد شیر علی کی فیملی نے قطار توڑی جس پر سب ہی ناراض ہوگئے۔اس معاملے پر ریسٹورنٹ انتظامیہ نے بھی موقف ظاہر کیا اور کہا کہ عابد شیر علی نے پہلے سے بکنگ کروائی ہوئی تھی۔

ریسٹورنٹ انتظامیہ نے مزید کہا کہ عابد شیر علی نے کوئی قطار نہیں توڑی۔ تاہم یہ بات طے ہے کہ برطانیہ میں پی ٹی آئی کارکنان جہاں مسلم لیگ ن کے رہنمائوں کو دیکھتے ہیں انہیں سرعام چور پکارنے لگتے ہیں حتیٰ کہ یہ لحاظ بھی نہیں کرتے کہ ساتھ خواتین اور بچے بھی ہیں، یہاں بھی ایسا ہی ہوا۔ عابد شیر علی کے ہمراہ سلمان شہباز اور اسکی فیملی بھی تھی جسکی بنا پر عابد شیر علی کو غضہ آیا اور انہوں نے بھی اپنا غبار خوب نکالا۔

اس توتکار میں دونوں اطراف سے قابل اعتراض باتیں بھی ہوئیں تاہم ریسٹورنٹ میں دیگر اقوام اور نسل کے لوگ زیادہ تھے جنہیں بس یہ سمجھ تو آرہی تھی کہ دو ایشیائی آپس میں لڑ رہے ہیں لیکن کہہ کیا رہے ہیں شائد ہی کسی کو سمجھ میں آیا ہو۔

عابد شیر علی نے اپنے موقف کی وضاحت اپنے ٹویٹر اکائونٹ پر کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے قطار سے بچنے کیلئے پہلے سے بکنگ کروا رکھی تھی جو بغض معاویہ میں پی ٹی آئی فیملی کو ہضم نہ ہورہی تھی، انہوں نے اپنے پیغام میں واضع کیا کہ گزشتہ چار پانچ سال سے پی ٹی آئی والوں نے اوورسیز میں جو وطیرہ اپنا رکھا ہے اب اسکامنہ توڑ جواب دیا جائے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes