ہمیں لڑنے کی کوئی ضرورت نہیں، نا ہم لڑنا چاہتے ہیں؛ نواز شریف کا پارٹی اجلاس سے خطاب – Kashmir Link London

ہمیں لڑنے کی کوئی ضرورت نہیں، نا ہم لڑنا چاہتے ہیں؛ نواز شریف کا پارٹی اجلاس سے خطاب

لندن (عدیل خان) پاکستان مسلم لیگ ن کے سربراہ سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف جو آجکل لندن سے پاکستان میں پارٹی کے مختلف اجلاسوں سے خطاب کرہے ہیں کچھ مفاہمتی پالیسی کا شکار لگنے لگے ہیں۔ پہلے کی طرح وہ صرف اعتراضات اور گلے شکوے ہی نہیں کررہے بلکہ اب مفاہمت کی بات بھی ہلکے پھلکے انداز میں ہونے لگی ہے۔ گذشتہ روز پارٹی کے مرکزی اجلاس سے خطاب میں انکا یہ کہنا کہ ہمیں لڑنے کی کوئی ضرورت نہیں نہ ہم لڑنا چاہتے ہیں۔ قانون اور آئین کی حکمرانی ہمیں مفاہمت سے ملے تو ہمیں کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ آئین کی حکمرانی ہوتی ہے تو ہمیں تیار رہنا چاہیے، بہت سے حلقوں میں زیر بحث ہے۔

لندن سے بذریعہ ویڈیو لنک پارٹی اجلاس سے خطاب میں نواز شریف کا کہنا تھا کہ ہماری بے توقیری اس لیے بھی ہے کہ بار بار آئین توڑتے ہیں۔ عدالتیں آئین توڑنے والوں کو قانونی قرار دیتی ہے۔اگر ہم منظم ہوں گے تو کوئی دھاندلی کا سوچ بھی نہیں سکتا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کے آئین و قانون کا احترام ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ 22 کروڑ عوام کو حکمرانی سے محروم کرتے ہیں، اور پھر پوچھتے ہیں کہ ہم بے توقیر کیوں ہو رہے ہیں اور ہمارا ملک زوال پذیر کیوں ہو رہا ہے۔

نواز شریف کا کہنا تھا کہ کئی دفعہ ان کی سیاست ختم کرنے کی کوشش کی گئی۔ نوازشریف کی سیاست ختم کرنے والے دیکھیں، نوازشریف کی سیاست اس کے سامنے بیٹھی ہے۔نواز شریف نے ملک کی ترقی کے حوالے سے کہا کہ اگر ان کو اقامے پر نہ نکالا جاتا تو پاکستان میں ترقی کا سفر جاری رہتا۔پاکستان کرپشن انڈکس میں ترقی کررہا ہے اور پاکستان کو کرپٹ ملک کہا جا رہا ہے۔ خدارا اس ملک کو چلنے دیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes