پینڈورا پیپرز ؛ کابینہ اور فوجی افسران سمیت سات سو پاکستانیوں کی آف شور کمپنیاں نکل آئیں – Kashmir Link London

پینڈورا پیپرز ؛ کابینہ اور فوجی افسران سمیت سات سو پاکستانیوں کی آف شور کمپنیاں نکل آئیں

لندن(کشمیر لنک نیوز) پنڈورا پیپرز میں پاکستانی وزیراعظم عمران خان تو سرخرو ہوگئے لیکن انکی کابینہ کے اہم ارکان اور فوجی افسران سمیت 700 سے زائد پاکستانیوں کے نام آف شور کمپنیوں رکھنے والوں کی صورت میں سامنے آگئے۔

پنڈورا پیپرز کی آف شور کمپنیوں کی لسٹ میں وزیر خزانہ شوکت ترین، وفاقی وزیر مونس الہٰی، سینیٹر فیصل واوڈا اور سینئر وزیر پنجاب عبدالعلیم خان کے نام بھی موجود ہیں۔ فہرست میں اپوزیشن کی طرف سے نواز شریف کے داماد ن لیگ کے سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے بیٹے کا نام بھی آگیا ہے جبکہ پی پی کے شرجیل میمن بھی اس لسٹ کا حصہ ہیں۔

پنڈورا پیپرز میں وفاقی وزیر صنعت خسرو بختار کے اہل خانہ کے نام بھی آف شور کمپنی نکل آئی ہے۔اس لسٹ میں وزیراعظم کے سابق معاون خصوصی وقار مسعود کے بیٹے اور ایگزیکٹ کمپنی کے مالک شعیب شیخ کے نام بھی آف شور کمپنی نکل آئی ہے۔ پنڈورا پیپرز کی فہرست میں کچھ ریٹائرڈ فوجی افسران، کچھ بینکار، کچھ کاروباری شخصیات اور کچھ میڈیا مالکان کے نام بھی شامل ہیں۔

ادھر سابق وزیر اعظم نواز شریف کے نواسے جنید صفدر نے آف شور کمپنی ہونے کی خبر چلانے والے چینلز کے خلاف قانونی چارہ جوئی کرنے کا اعلان کر دیا۔جنید صفدر نے کہا کہ میں نے قانونی چارہ جوئی کے سلسلے میں اپنے وکیل کو ہدایت جاری کردی ہیں۔ مریم نواز کے صاحبزادے جنید صفدر نے کہا کہ میری کوئی آف شورکمپنی نہیں، میں طالب علم ہوں، میرا صرف ایک بینک اکاؤنٹ ہے۔

علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پنڈورا پیپرز میں جو بھی قصور وار پایا گیا اس کے خلاف کارروائی ہوگی، حکومت پنڈورا پیپرز میں شامل تمام پاکستانیوں کی تحقیقات کرے گی۔عمران خان نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ پینڈورا پیپرز کی تحقیقات کا خیرمقدم کرتے ہیں، اشرافیہ نے ٹیکس چوری، کرپشن سے ناجائز دولت بنائی۔

پنڈورا پیپرز میں کچھ غیر ملکی سربراہان مملکت اور نامور سیاسی شخصیات کے نام بھی سامنے آگئے ہیں۔ اردن کے بادشاہ شاہ عبداللہ کے نام بھی آف شور کمپنی نکل آئی۔آف شور کمپنیاں رکھنے والوں سے متعلق پنڈورا پیپرز کی لسٹ میں قطر کے حکمرانوں کا نام بھی سامنے آیا ہے، سابق برطانوی وزیراعظم ٹونی بلیئر کے نام بھی آف شور کمپنی سامنے آئی ہے۔یوکرین، روس، کینیا اور ایکواڈور کے صدور کے نام بھی آف شور کمپنیاں نکلی ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes