برطانیہ کے پہلے پاکستانی نژاد جج بیرسٹر صبغت اللہ قادری انتقال کرگئے، نماز جنازہ منگل کے روز ادا کی جائیگی – Kashmir Link London

برطانیہ کے پہلے پاکستانی نژاد جج بیرسٹر صبغت اللہ قادری انتقال کرگئے، نماز جنازہ منگل کے روز ادا کی جائیگی

لندن (اکرم عابد) دنیا کو امن، محبت، عدم تشدد اور یگانگت کا درس دینے والے برطانیہ میں پہلے پاکستانی نژاد جج بیرسٹر صبغت اللہ قادری دار فانی سے کوچ کرگئے، وہ کچھ عرصہ سے مختلف جان لیوا بیماریوں کا شکار تھے۔ منگل کی صبح وہ دنیا کی بازی ہار کر اپنے خالق حقیقی سے جاملے۔ ان کی عمر85برس تھی وہ گزشتہ کئی دنوں سے کینسر کے علاج کے سلسلے میں ہونے والی کیمیوتھراپی کے لئے ہسپتال میں داخل تھے۔ بیرسٹر صبغت اللہ قادری کے انتقال کی خبر کمیونٹی اور باالخصوص ان کے چاہنے والوں پر بجلی بن کر گری جسکے بعد برطانیہ اور دنیا بھر میں ان کے چاہنے والوں نے سوشل میڈیا پر اور فون کرکے مرحوم کی اہلیہ اور صاحبزادے بیرسٹر صداقت اللہ قادری سے تعزیت کی۔

مرحوم بیرسٹر صبغت اللہ قادری نے ایوبی اور ضیاء الحق کے مارشل لائوں کے خلاف بطور سٹوڈنٹ اور بطور وکیل جدوجہد کی اور کئی مرتبہ گرفتار ہو کر جیلوں میں بھی گئے۔ انہوں نے سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو اور ان کی صاحبزادی محترمہ بے نظیر بھٹو شہید کے ساتھ بھی کام کی اور اور انہیں اپنی رائے سے آگاہ کرتے رہے۔ انہوں نے 1973ء کے آئین کی ڈرافٹنگ میں بھی اہم کردار ادا کیا خاص طور پر آئین کے اندر انسانی حقوق اور خواتین کے حقوق کی شقوں پر کام کیا۔ مرحوم کی نماز جنازہ منگل 9 نومبر کو گیٹن روڈ مسجد ٹوٹنگ میں نماز ظہر کے بعد ساڑھے بارہ بجے ادا کی جائے گی جسکے بعد انہیں سربٹن کے قبرستان میں سپردخاک کردیا جائے گا۔

کراچی کے ایک مذہبی گھرانے سے تعلق رکھنے والے بیرسٹر صبغت اللہ قادری فن لینڈ سے تعلق رکھنے والی اپنی اہلیہ کریتا کے ساتھ 5 دہائیوں سے زیادہ عرصے سے زندگی گزار رہے تھے۔ انہوں نے ایک صاحبزادے بیرسٹر صداقت اللہ قادری اور ایک صاحبزادی ماریہ قادری سمیت اپنے ہزاروں شاگردوں اور مداحوں کو سوگوار چھوڑا۔ وہ طویل عرصہ تک لندن میں پریکٹس کرتے رہے۔ انہیں قانونی اور کمیونٹی خدمات کے صلے میں 1989ء میں برطانیہ کے پہلے مسلمان کیوسی کا اعزاز حاصل ہوا۔ وہ کچھ عرصہ سے پھیپھڑوں کے سرطان میں مبتلا تھے اور بعض دوسری پیچیدگیوں کی وجہ سے جانبر نہ ہوسکے۔

مرحوم کی وفات پر انکے دیرینہ اور قریبی ساتھیوں نے انتہائی دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انہیں برٹش پاکستانی کمیونٹی کے ماتھے کا جھومر قرار دیا ہے۔ مرحوم کے قریبی ساتھی اور سابق صدر یوکے پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری اکرام خان نے اشکبار آنکھوں ور بھرائی ہوئی آواز میں بتایا کہ ان کی دوستی چھ دہائیوں پر محیط تھی اور ان کے قادری خاندان کے ساتھ گھریلو مراسم تھے۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ بیرسٹر قادری ان سے دو برس چھوٹے تھے تاہم رتبے میں ان کا مقام بہت زیادہ تھا۔ بیرسٹر قادری کے ایک قریبی رفیق حبیب جان نے کہا کہ ان کی تو دنیا ہی لٹ گئی ہے۔ بیرسٹر قادری ان کے لئے برطانیہ میں سب کچھ تھے۔ اس کے علاوہ بیرسٹر امجد ملک، طارق ڈار، اکرام قائم خانی، جیمز شیرا، ایلڈرمین مشتاق لاشاری، بیرسٹر رشید احمد، صدر پاکستان پریس کلب مبین چوہدری، اکرم عابد اور دیگر نے ان کی موت کو کمیونٹی کے لئے ایک بڑا سانحہ قرار دیا ہے۔
Funeral: 8 Gatton Road Masjid Tooting London SW17 0EZ after Zuhr prayer at 12:30 PM on Tuesday 9/11/21
Burrial: Surbiton Cemetery Lower Marsh Lane Surbiton KT1 3BJ at 1:30PM

50% LikesVS
50% Dislikes