آئی ایم ایف سے قرض معاہدے کی مدت بڑھانے کے بجائے نیا معاہدہ زیادہ بہتر ہوگا؛ اسحاق ڈار – Kashmir Link London

آئی ایم ایف سے قرض معاہدے کی مدت بڑھانے کے بجائے نیا معاہدہ زیادہ بہتر ہوگا؛ اسحاق ڈار

لندن (راجہ لیاقت حسین) برطانیہ میں مقیم پاکستان کے سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے آئی ایم ایف سے قرض معاہدے کی مدت بڑھانے کے بجائے نئے معاہدے کی خواہش ظاہر کردی ہے، ایک نجی پاکستانی ٹی وی کے پروگرام میں پاکستانی معیشت کی بہتری کے حوالے سے اظہار خیال کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ پچھلی حکومت نے انتہائی سخت شرائط پر عالمی ادارے سے معاہدہ کیا۔ ہمیں ملک چلانا ہے، ڈکٹیشن لے کر ملک کا بیڑا غرق نہیں کرنا، آئی ایم ایف سے نیا معاہدہ کرنا ہوگا۔

سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈا ر کا کہنا تھا کہ آٹے پر سبسڈی دیں گے جس سے 2 روز میں آٹے کی قیمت میں کمی ہوگی، پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں بڑھاکے ایک دم عوام پر بوجھ نہیں ڈال سکتے۔ میری رائے میں آئی ایم ایف سے دوبارہ مذاکرات کرنے چاہئیں۔ انکا مزید کہنا تھا کہ پچھلی حکومت نے انتہائی سخت شرائط پر معاہدہ کیا۔ ہمیں ملک چلانا ہے، ڈکٹیشن لے کر ملک کا بیڑا غرق نہیں کرنا۔ انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخواحکومت کو بھی آٹے کی قیمت میں کمی کرنا چاہیے، ملک کے یہ حالات پچھلی حکومت کی نااہلی کی وجہ سے ہوئے۔

اسحاق ڈار نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے ریونیو نہیں بڑھایا، پی ٹی آئی کو پتا تھا کہ وہ حکومت سے جارہے ہیں، اس لیے انہوں نے پٹرولیم قیمتوں میں کمی کی۔ایک سوال کے جواب میں اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ پچھلی حکومت نے روپے کو کھلا چھوڑ کر بیڑا غرق کردیا۔ مانیٹری پالیسی کو ایک فیصد کنٹرول کرنے سے اربوں روپے پاکستان کے بچتے ہیں۔ سابق وزیر خزانہ نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت نے کیش فلو کو مینج کیا، روپے کو کھلا چھوڑنے سے 4 ہزار ارب کا ملک کو نقصان ہوا۔

50% LikesVS
50% Dislikes