مالی طور پر کمزور مگر ذہین طلبا کی امداد کیلئے آکسفورڈ پاکستان پروگرام کا آغاز – Kashmir Link London

مالی طور پر کمزور مگر ذہین طلبا کی امداد کیلئے آکسفورڈ پاکستان پروگرام کا آغاز

آکسفورڈ (آفتاب بیگ) آکسفورڈ یونیورسٹی کے سابق پاکستانی نژاد طلباء ہارون زمان، طلحہ پیرزادہ، منائل ثاقب اور ڈاکٹر عدیل ملک نے گذشتہ روز ایک ایسے پروجیکٹ کو متعارف کروایا ہے جس کا مقصد پاکستان کے ایسے طلباء کی مالی معاونت ہے جو قابلیت اور صلاحیت کی وجہ سے آکسفورڈ یونیورسٹی کے معیار پر تو اترتے ہیں لیکن مالی کمزوری کے باعث یونیورسٹی کی فیس اور دیگر اخراجات ان کے روشن مستقبل کے راہ میں رکاوٹ بن جاتی ہے ۔

اس مشکل کا سدباب کرنے کے لیے طلباء نے آکسفورڈ پاکستان پروگرام کا آغاز کیا ہے جس کے پہلے پانچ سال کے لیے نامور کاروباری شخصیات اور اداروں کی مدد سے تقریباً ایک ملین پونڈ کی خطیر رقم اکٹھی کی جا چکی ہے ،گروپ کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ اس سلسلہ میں قابلیت ، صلاحیت اور میرٹ واحد ترجیح ہو گی۔

پروجیکٹ کی افتتاحی تقریب آکسفورڈ یونیورسٹی کے لیڈی مارگریٹ ہال میں منعقد کی گئی جس میں پاکستانی ہائی کمشنر معظم احمد خان ممبران پارلیمنٹ ناز شاہ اور یاسمین قریشی کے علاوہ ملالہ یوسفزئی یونیورسٹی کالجز کے پرنسپلز ، سیاسی ، سماجی اور کاروباری شخصیات کی بڑی تعداد نے شرکت کی ،شرکاء نے نوجوانوں کی کوششوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ پروجیکٹ پاکستان کے ان طلباء کے لیے روشنی کی کرن ثابت ہو گا جو مالی مشکلات کی وجہ سے آکسفورڈ یونیورسٹی جیسی عالمی شہرت یافتہ درسگاہ میں اعلی تعلیم حاصل نہیں کر پاتے ۔

اس موقع پر پروگرام کے پہلے پانچ سال کے لیے مالی عطیات دینے والی شخصیات کو ملالہ یوسفزئی نے تعریف اسناد دیں ،منتظمین کے مطابق اس سال داخلہ کے لیے طلباء کا انتخاب آخری مراحل میں ہے جب کہ کوشش ہے کہ اس پروگرام کو پانچ سال کی بجائے مستقل بنیادوں پر جاری رکھا جا سکے ،پاکستانی ہائی کمشنر معظم علی نے حکومت پاکستان کی جانب سے اپنے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کروائی جبکہ شرکاء میں موجود پاکستانی اداکار مومن ثاقب نے نوجوانوں کا اپنے ہم وطن طلباء کے لیے مثبت سوچ کے جذبہ کی تعریف کی۔

50% LikesVS
50% Dislikes