لندن میں کووڈ 19 پابندیوں کے خاتمے کے حوالے سے احتجاجی مظاہرے متعدد افراد گرفتار – Kashmir Link London

لندن میں کووڈ 19 پابندیوں کے خاتمے کے حوالے سے احتجاجی مظاہرے متعدد افراد گرفتار

لندن (اکرم عابد) کورونا وبا نے جہاں دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لیکر لاکھوں لوگوں کو موت کی نیند سلادیا ہے وہیں لاکھوں لوگ ایسے بھی ہیں جو ابھی تک اسکی سنگینی سے انکاری ہیں، یہ رویہ صرف ترقی پذیر ممالک میں ہی نہیں بلکہ ترقی یافتہ ممالک میں بھی بدرجہ اتم موجود ہے۔
برطانوی دارالحکومت لندن میں بکنگھم پیلس کے سامنے اس حقیقت سے انکاری سینکڑوں افراد نے مظاہرہ کیا اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ انکی آزادیوں پر بے جا پابندیاں نہ عائد کی جائیں۔


مظاہرین ہاتھوں میں بینرز اورپلے کارڈ اٹھائے ہوئے تھے، جس پر آزادی اور کووڈ۔19 کی پابندیاں ختم کرنے کے مطالبے پرمبنی نعرے درج تھے۔ جب مظاہرین کا ہجوم ٹرافلگر اسکوائر جانے کیلئے بکنگھم پیلس کے گیٹ کے سامنے واقع ملکہ وکٹوریہ کی یادگار کے سامنے جمع ہوا تو بڑی تعداد میں پولیس وہاں تعینات تھی، مظاہرین وبا کے حوالے سے نئے قوانین کا جبر ختم کرنے اور ویکسین کے خلاف نعرے لگا رہے تھے۔
لیبر پارٹی کے سابق قائد جیرمی کوربن کے بھائی پیئرس کوربن بھی مظاہرے میں شریک تھے۔


مظاہرین کا کہنا تھا کہ برطانیہ اور امریکہ کے درمیان ہونے والی کوئی بھی ڈیل ایک خوفناک کہانی کی مانند ہوگی اور اس سے این ایچ ایس، برطانیہ کے فوڈ اسٹینڈرڈ اورجمہوریت کو خطرات لاحق ہوں گے۔
لاک ڈائون کے خلاف مظاہرہ کرنے والے کم از کم 10 افراد کو بکنگھم پیلس کے سامنے سے گرفتار کرنے کی تصدیق بھی پولیس نے کی ہے۔ مظاہرین کا یہ ہجوم ٹرافلگر اسکوائر جانے کیلئے بکنگھم پیلس کے گیٹ کے سامنے واقع ملکہ وکٹوریہ کی یادگار کے سامنے جمع ہوا تو بڑی تعداد میں پولیس وہاں تعینات تھی، مظاہرین وبا کے حوالے سے نئے قوانین کا جبر ختم کرنے اور ویکسین کے خلاف نعرے لگا رہے تھے۔


میٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے قواعد پر عملدرآمد کرنا ہر ایک کی ذمہ داری ہے۔ انھوں نے کہا کہ فورس لندن کے شہریوں کی صحت کودائو پر لگانے کی اجازت نہیں دے گی اورخلاف ورزی کرنے والے لوگوں اورگروپوں کے خلاف کارروائی کرے گی۔

50% LikesVS
50% Dislikes