بختاور کے سسرالیوں بارے پیپلز پارٹی کی وضاحت جاری، منگیتر برطانیہ سے لا گریجویٹ ہیں – Kashmir Link London

بختاور کے سسرالیوں بارے پیپلز پارٹی کی وضاحت جاری، منگیتر برطانیہ سے لا گریجویٹ ہیں

لندن (اکرم عابد) جس طرح پاکستانی میڈیا کو روزانہ اپنے ٹاک شوز گرمانے کیلئے کسی ایشو کی ضرورت ہوتی ہے بالکل اسی طرح یوٹیوب پر اپنے اپنے چینل بنائے آمدنی کے منتظر نیم اور جغادری سمیت ہر قسم کے صحافیوں اور سوشل میڈیا پے دن گذار کر خود کو دانشور سمجھنے والے خواتین و حضرات کو مواد کی ضرورت ہوتی ہے۔ ان پلیٹ فارمز پر چونکہ ابھی جھوٹ بولنے اور کسی پر بھی الزام تھوپنے کی کوئی خاص پابندی نہیں اسلیئے یہ پلیٹ فارمز عمومی طور پر اسکینڈلز کیلئے استعمال ہورہے ہیں۔

انہی پلیٹ فارمز کا حالیہ کمال پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کی صاحبزادی کے ہونے والے سسرالیوں بارے پروپیگنڈہ ہے۔ چونکہ منگنی کی رسم ابھی ستائیس نومبر کو ہونا ہے اسلیئے اس پروپیگنڈے کو ختم کرنے کیلئے پارٹی کیطرف سے آفیشل بیان جاری کرکے خاندان بارے وضاحت جاری کردی گئی ہے۔

پیپلز پارٹی میڈیا سیل کیطرف سے بختاور بھٹو کے سسرالیوں بارے بتایا گیا ہے کہ انکا تعلق لاہور سے ہے۔ جاری بیان کے مطابق منگیتر محمود چوہدری محمد یونس اور بیگم ثریا کے بیٹے ہیں جو صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور سے تعلق رکھتے ہیں۔
وضاحت کے مطابق محمد یونس 1973 میں متحدہ عرب امارات منتقل ہوئے تھے جہاں انہوں نے سخت محنت سے کنسٹرکشن اور ٹرانسپورٹ کا کاروبار قائم کیا۔

محمود جو اپنے پانچ بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹے ہیں، 28 جولائی 1988 کو ابوظہبی میں پیدا ہوئے۔
انہوں پرائمری تعلیم ابوظہبی سے حاصل کی جبکہ سیکنڈری تعلیم برطانیہ میں حاصل کی۔
ڈرہم یونیورسٹی سے انہوں نے قانون کی ڈگری لی۔ یہ وہی یونیورسٹی ہے جہاں سے مریم نواز کے بیٹے جنید صفدر نے تعلیم حاصل کی ہے

محمود چوہدری کا خاندان متحدہ عرب امارات میں مقیم ہے۔
تاہم اس وضاحت کے بعد کچھ لوگ مزید کوڑیاں میدان میں لے آئے ہیں لیکن ضروری نہیں کہ پیپلز پارٹی آئے روز کے اعتراضات کے جواب بھی دے۔

50% LikesVS
50% Dislikes