برطانیہ میں نئے مہلک وائرس کی تباہ کاریاں، ملک کے بیشتر حصوں میں آج سے سخت لاک ڈائون کا نفاذ – Kashmir Link London

برطانیہ میں نئے مہلک وائرس کی تباہ کاریاں، ملک کے بیشتر حصوں میں آج سے سخت لاک ڈائون کا نفاذ

لندن (مبین چوہدری) برطانیہ کے بیشتر حصوں میں کورونا وبا تیزی سے پھیلنے کے باعث دوبارہ لاک ڈائون کا نفاذ کردیا گیا جس کا اطلاق فوری طور پر ہوگا۔ وزیراعظم بورس جانسن نے شکل اور ساخت تبدیل کرتے کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے یہ فیصلہ ایک ہنگامی اجلاس کے بعد کیا ہے۔

نئے لاک ڈائون کے مطابق حکومت نے انگلستان کے جنوب مشرقی حصے اور دارالحکومت لندن میں ٹرانسپورٹ کے تمام روٹ بند کرنے پر اور لاک ڈائون کی سختی کا تیئر چار متعارف کرادیا ہے۔

برطانیہ میں کورونا سے مزید 489 افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد اموت کی تعداد 66500 سے تجاوز کرگئی۔ برطانیہ میں 24 گھنٹوں میں مزید 28 ہزار 507 افراد وائرس سے متاثر ہوئے جس کے بعد متاثرین کی تعداد 19 لاکھ 77 ہزار سے زیادہ ہوگئی ہے جب کہ ملک کے بیشتر حصوں میں انفیکشن کی سطح بڑھ گئی ۔

نئی پابندیوں کے مطابق لاک ڈائون والے علاقوں میں کرسمس پر دی گئی رعائیتیں بھی ختم کردی گئی ہیں، ہنگامی اجلاس میں کورونا سے مطابقت رکھنے والی نئی وبا کے مہلک ترین اثرات کا بھی جائزہ لیا گیا جسکا پتہ چند دن قبل ہی چلا تھا۔

حالیہ دنوں میں سامنے آنے والے کورونا کیسز کے ساٹھ فیصد مریضوں میں اس مہلک وائرس کی نشاندہی ہوئی ہے۔ وزیر اعظم برس جانسن کا کہنا ہے کہ نیا وائرس ایک سے دوسرے میں آجانے کا ستر فیصد زائد اثر رکھتا ہے جسکی وجہ سے حالیہ دنوں میں مریجوں کی تعداد میں ہوشربا اضافہ ہوا۔


نئے لاک ڈائون کا اعلان کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ گھمبیر صورتحال کے تحت انکے پاس اسکے علاوہ کوئی چارہ نہیں کہ وہ کرسمس پر دی جانے والی چھوٹ واپس لے لیں۔ ٹیئر چار کی پابندیوں میں لوگوں کو گھروں سے باہر نکلنے سے بھی منع کردیا گیا ہے اور سفر اسے صورت کرنے کی ہدائت کی گئی ہے جب اسکے سوا کوئی چارہ نہ ہو۔

واضع رہے ٹیئر چار کے متاثرین کو کم اثر والے دیگر علاقوں میں جانے سے بھی روک دیا گیا ہے۔ اس پابندی اطلاق اتوار سے ہونے کی وجہ سے لوگوں کے پاس بہت کم وقت بچا کہ وہ لندن سے نکل سکیں۔ اسی لئے ہفتے کی شام سے لیکر نصف شب تک ٹرین اسٹیشنز پر مسافروں کا غیر معمولی رش دیکھنے کو ملا۔

50% LikesVS
50% Dislikes