ولیم شوکراس کی تعیناتی پر برطانوی مسلم رہنمائوں کے تحفظات، حکومت سے نظر ثانی کی اپیل – Kashmir Link London

ولیم شوکراس کی تعیناتی پر برطانوی مسلم رہنمائوں کے تحفظات، حکومت سے نظر ثانی کی اپیل

مانچسٹر (محمد فیاض بشیر) حکومت برطانیہ نے شدت پسندی اور دہشت گردی کی تعاریف پر نظر ثانی اور نئی حکمت عملی کیلئے ولیم شاکراس کی سربراہی میں کمیٹی تشکیل دی ہے برطانوی ہاؤس آف لارڈز کے رکن لارڈ کارلائل بھی اس میں شامل ہیں۔

ولیم شاکر کے ماضی میں اسلام مخالف متنازعہ بیانات کے تناظر میں حکومت برطانیہ کو اپنے فیصلے پر نظر ثانی کے لیے پاکستانی نژاد برطانوی رکن پارلیمنٹ اور اپوزیشن کے ڈپٹی لیڈر افضل خان نے سیکرٹری اسٹیٹ کو ایک خط لکھا ہے۔ جس میں کہا ہے کہ ولیم شاکراس کی تقرری پر ایمنسٹی انٹرنیشنل، رنی میڈ ٹرسٹ لبرٹی اور مسلم کمیونٹی و سماجی تنظیموں کے علاوہ 450 سے زائد برٹش اسلامک تنظیموں نے ماضی میں اسلام مخالف متنازعہ بیانات پر شدید تحفظات اور خدشات کا اظہار کررکھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مانچسٹر کے حلقہ گورٹن جہاں سے وہ رکن برطانوی پارلیمنٹ منتخب ہوئے ہیں وہاں کے رہائشیوں نے بھی اپنے تحفظات بارے انہیں آگاہ گیا ہے۔ افضل خان نے حکومت برطانیہ سے مطالبہ کیا ہے ولیم شاکراس کی تقرری پر نظر ثانی کر کے یہ ذمہ داری کسی اور کو سونپنے سے پہلے مسلم کونسل برطانیہ اور مسلم کمیونٹی کی دیگر تنظیموں کو اعتماد میں لیا جائے تاکہ کسی غیر جانبدار شخص کو یہ اہم ذمہ داری سونپی جاسکے۔

دریں اثنا اولڈہم کونسل کی ڈپٹی لیڈر عروج شاہ نے بھی اسلاموفوبیا کی درست تعریف کیلئے آل پارٹی پارلیمانی گروپ آن برٹش مسلم کی سفارشات کو مدنظر رکھنے کیلئے تحریک استحقاق کونسل میں جمع کرادی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ہر طرح کے تعصب سے نبردآزما ہونے کیلئے ایسا انتہائی ضروری ہے۔ مقامی ممبر پارلیمنٹ افضل خان نے عروج شاہ کے اس اقدام کی بھی تعریف کی ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes