وزیر اعظم برطانیہ اور میئر آف لندن سمیت متعدد ممبران پارلیمنٹ کی مسلمانوں کو عید کی مبارکباد – Kashmir Link London

وزیر اعظم برطانیہ اور میئر آف لندن سمیت متعدد ممبران پارلیمنٹ کی مسلمانوں کو عید کی مبارکباد

مانچسٹر (محمد فیاض بشیر) وزیر اعظم برطانیہ بورس جانسن سمیت متعدد ممبران پارلیمنٹ اور ایم شخصیات نے برطانیہ میں مقیم مسلمانوں کو عید کی مباکباد دی ہے۔

بورس جانسن نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں انکا کہنا تھا کہ جذبہ ایثار اور قربانی سے بھرپور مسلم کمیونٹی کو عید کی خوشیاں مبارل، اپنی جانب سے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کورونا کیخلاف کردار ادا کرنے والے مسلمانوں سے اظہار تشکر کیا، جبکہ وبا کی صورتحال کے پیش نظر عید کے ساتھ احتیاطی تدابیر پر عمل کرنے کی تاکید کی۔ انکا کہنا تھا کہ رمضان المبارک میں بھی ان احتیاطی تدابیر کو مدنظر رکھا گیا جو خوش آئیند ہے اس دوران انہوں نے آن لائن افطار ڈنر کا ذکر کیا اور ماہ رمضان میں ملک بھر میں کورونا متاثرین کی بڑھ چڑھ کر خدمت کرنے پر مسلمانوں کا شکریہ بھی ادا کیا۔

میئر آف لندن صادق خان نے بھی عید کے موقع پر تمام مسلمانوں کو عید کی مبارک دیتے ہوئے کہا کہ رمضان کے بعد یہ خوشی کا تہوار ہمیں ایک دوسرے سے جوڑنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔

لارڈ نذیر احمد، لارڈ قربان حسین، افضل خان ایم پی، رحمان چشتی ایم پی اور اولڈہم سے رکن برطانوی پارلیمنٹ جم میکمان نے بھی اپنے اپنے پیغامات میں ملک بھر کے مسلمانوں کو عید کی مبارک دی۔
ممبران پارلیمنٹ کا کہنا تھا کہ ماہ رمضان کے دوران مذہبی فریضہ کو بخوبی سر انجام دینے کے بعد عید کی خوشیاں مسلمانوں کا حق ہے تاہم انہوں نے کمیونٹی کو متنبہ بھی کیا کہ کورونا وبا کے دوران ابھی بہت احتیاط کی ضرورت ہے۔ ایک دوسرے سے میل جول کے موقع پر احتیاط برتیں ۔ انکا کہنا کہ ہم برطانوی معاشرے میں امن و خوشحالی کے خواہاں ہیں لیکن جو اس وقت فلسطین اور اسرائیل کی کشیدہ صورتحال ہے اور معصوم جانوں کا ضیاع ہوا ہے وہ انتہائی افسوسناک ہے۔

نکا کہنا تھا کہ فلسطینیوں کو پرسکون زندگی بسر کرنے کا حق ملنا چاہیے۔ انکا کہنا تھا کہ عالمی برادری کو امن کے لیے سفارتی سطح پر کاوشوں کو تیز کرنا چاہیے ہم میں سے کوئی بھی ایسے مناظر نہیں دیکھنا چاہتا۔
مسلمان ممبران پارلیمنٹ نے مظلوم فلسطینیوں کیساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ اسرائیل کی دہشت گردی کا نوٹس لے۔

50% LikesVS
50% Dislikes