ممبران پارلیمنٹ مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام کا کیس برطانوی حکومت تک پہنچائیں، تحریک حق خود ارادیت – Kashmir Link London

ممبران پارلیمنٹ مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام کا کیس برطانوی حکومت تک پہنچائیں، تحریک حق خود ارادیت

مانچسٹر(محمد فیاض بشیر) جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل برطانیہ کی چیئرپرسن کونسلر یاسمین ڈار اور تحریک کی نارتھ آف انگلینڈ کی چیئرپرسن کونسلر نائلہ شریف کی لیبرپارٹی کے ممبران برطانوی پارلیمنٹ، کونسلروں، کمیونٹی لیڈروں اور سفارت کاروں کے ساتھ تقریب میں شرکت۔ اس تقریب میں لارڈ واجد خان، کیٹ گرین ایم پی، ریبیکلا لانگ بیلے ایم پی، لوسی پاوول ایم پی، انجیلا رائنر ایم پی ڈپٹی لیڈر لیبر پارٹی، افضل خان ایم پی، یاسمین قریشی ایم پی، ٹونی لوئڈایم پی، جیف سمتھ ایم پی، اینڈریو گوئن ایم پی، فیصل رشید سابق ایم پی، طارق وزیر کونسل جنرل پاکستان، کونسلر عابد چوہان سابق لارڈ میئر مانچسٹر و دیگر اہم شخصیات نے شرکت کی۔

تحریک کی دونوں عہدیداروں نے مسئلہ کشمیر کے سلسلہ میں تحریکی عہدیداروں کے ساتھ تعاون کرنے والے کشمیر دوست ممبران برطانوی پارلیمنٹ کا شکریہ ادا کیا اور تحریک کے مستقبل کے پروگراموں کے بارے میں آگاہ کیا اور برطانوی ممبران پارلیمنٹ کو تحریک کی برطانیہ بھر میں جاری سرگرمیوں میں شرکت کی دعوت دی۔ اس کے علاوہ مقبوضہ جموں کشمیر کے علاقہ سری نگر کی جامع مسجد میں بھارتی حکومت کی جانب سے نماز جمعہ پر پابندی عائد کرنے، مذہبی تقریبات پر پابندی لگانے اور بھارت میں جاری انسان مخالف ہندوتوا پالیسیوں کے بارے میں بھی برطانوی ممبران پارلیمنٹ کو آگاہ کیا گیا اور ان سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام کا کیس برطانوی حکومت تک پہنچائیں اور برطانوی پارلیمنٹ میں پیش کریں اور بھارتی حکومت پر دباؤ ڈالیں تاکہ بھارت جلد از جلد مسئلہ کشمیر کو پرا من طریقے سے حل کرے اور بھارت مقبوضہ جموں کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیاں فوری طور پر ختم کرے۔

سیاسی قیدیوں کو رہا کرے اور بھارت نے مقبوضہ جموں کشمیر میں آبادی کے تناسب کو سازش کے تحت تبدیل کرنے کو جو بھیانک سلسلہ شروع کر رکھا ہے اُس کو رکوانے کے لئے تمام انسان دوست اور کشمیر دوست ممبران برطانوی پارلیمنٹ تحریک کے عہدیداروں کے ساتھ تعاون کریں اور مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام کا مضبوط کیس برطانوی پارلیمنٹ میں اُٹھائیں اور اُن مظلوموں کی آواز بنیں۔دونوں تحریکی راہنماؤں نے اس موقع پر برطانوی ممبران پارلیمنٹ کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے انہیں بتایا کہ مقبوضہ جموں کشمیر میں بھارتی افواج کی جانب سے خواتین پر بد ترین مظالم ڈھائے جا رہے ہیں۔ انسانی حقو ق کے لئے آواز بلند کرنے والے نمائندوں، صحافیوں، نوجوانوں غرض یہ کہ ہر عمر کے افراد کو بھارتی افواج اپنے سنگین ظلم و ستم کا نشانہ بنا رہی ہیں۔مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام کی آواز پوری دنیا میں پہنچانے کے لئے جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کے عہدیداران اپنی ذمہ داریاں پوری کر رہے ہیں اور دن رات لابی مہم تیز کرنے کے لئے متحرک ہیں اور ہم سب اس وقت تک متحرک رہیں گے اور اپنی آواز بلند کرتے رہیں گے جب تک بھارت مقبوضہ جموں کشمیر سے اپنا ناجائز قبضہ ختم نہیں کرتا اور تمام سیاسی، سماجی،مذہبی اور دیگر راہنماؤں کو بھارت کی جیلوں سے رہا نہیں کرتا۔

دونوں تحریکی راہنماؤں نے بھارت کی مختلف جیلوں میں قید کشمیری خواتین اور حریت کانفرنس کی قیادت کی فوری رہائی کا مطالبہ بھی کیا۔اس موقع پر دونوں تحریکی عہدیداروں نے اس عز م کا بھرپور اظہار کیا کہ جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹرنیشنل کی پوری ٹیم بانی چیئرمین راجہ نجابت حسین کی قیادت میں ریاست جموں و کشمیر کے عوام کے حق خود ارادیت کے حصول کے لئے ہر موثر فورم پر بھرپور آواز بلند کرتی رہے گی اور ہم اپنی لابی مہم میں مذید تیزی لائیں گے اور بین الا قوامی ایوانوں، با اثر فورمز اور عالمی اثر و رسوخ رکھنے والی کشمیر دوست شخصیات کی حمایت حاصل کرتے رہیں گہ تا کہ مقبوضہ جموں کشمیر میں بھارت کی جانب سے جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہمیشہ کے لئے بند کروائی جا سکیں۔دونوں تحریکی راہنماؤں نے تمام ممبران برطانوی پارلیمنٹ و دیگر اہم شخصیات کا شکریہ ادا کیا اورکہا کہ جس طرح آپ نے ماضی میں ہمارا بھرپور ساتھ دیا اور مسئلہ کشمیر کو برطانوی پارلیمنٹ میں بلند کیااسی طرح مستقبل میں بھی مقبوضہ جموں وکشمیر کے عوا م کی آواز کو تحریکی عہدیداروں کے ساتھ مل کر ہر فورم پر بلند کرنے میں اپنا ہر ممکن عملی کردار ادا کرتے رہیں گے اور مسئلہ کشمیر کو پرامن طریقہ سے حل کروانے کے لئے ہر فورم پر آواز بلند کریں گے۔

50% LikesVS
50% Dislikes