اقوام متحدہ کی 2018/19 کی مقبوضہ کشمیر بارے رپورٹ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا ثبوت ہے: ڈیبی ابراہام – Kashmir Link London

اقوام متحدہ کی 2018/19 کی مقبوضہ کشمیر بارے رپورٹ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا ثبوت ہے: ڈیبی ابراہام

اولڈہم (محمد فیاض بشیر) یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے اپنے جذبات کا اظہار کرتے ہوئے رکن برطانوی پارلیمنٹ اور آل پارٹیز کشمیر پارلیمانی گروپ کی چئیر پرسن ڈیبی ابراہم نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی 2018/19 کی کشمیر بارے جاری کی گئی رپورٹ میں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزیوں بارے ذکر کیا گیا ہے اور ڈیڑھ برس پہلے بھارتی حکومت کی جانب سے آئین کی شق 317/35A میں کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے جو نیا قانون لاگو کیا ہے اس سے کشمیر میں جاری کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے جسکا دنیا کے منصفوں کو نوٹس لینا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ وہ وفد کے ہمراہ پچھلے سال آزاد کشمیر کے دورے پر گئیں وہاں حالات معمول کے مطابق ہیں لیکن بھارت کی جانب سے زمینی حد بندی کی بین الاقوامی خلاف ورزیوں سے حالات انتہائی کشیدہ ہیں انکا کہنا تھا کہ ایمنسٹی انٹرنیشنل اور دیگر انسانی حقوق کی تنظیموں مقبوضہ کشمیر میں کام کرنے نہیں دیا جا رہا جس سے وہاں کی زمینی صورتحال سے آگاہی مشکل ہے ان کا کہنا تھا کہ بھارت نے باہر سے آئے لوگوں کو بھارت کی شہریت حاصل کرنے کے قانون میں ترمیم کرکے مسلمانوں کے لیے مشکلات پیدا کیں جو مذہبی امتیاز کے زمرے میں آتا ہے۔

ایم پی ڈیبی ابراہام کا کہنا تھا کہ دنیا کے دیگر خطوں میں بھی انسانیت کا قتل عام ہو رہا ہم کیوں اس سے سیکھ نہیں رہے اور کیوں دنیا کشمیر کی کشیدہ صورتحال سے چشم پوشی کر رہی ہے ۔ انہوں نے اپیل کی کہ جو بھی بحیثیت گروپ یا پھر ذاتی کاوشوں سے کشمیر کے لیے کام کر رہا ہے مجھ سے رابطہ تاکہ ہم یک زبان ہو کر ٹھوس لائحہ عمل اپنائیں اور بین الاقوامی کمیونٹی پر مسئلہ کشمیر بارے دباؤ ڈالا جا سکے۔

50% LikesVS
50% Dislikes