ملالہ یوسفزئی اور شبانی عظمی سمیت سو سے زائد مسلمان خواتین کی بھارتی ایپ پر نیلامی، دو افراد گرفتار – Kashmir Link London

ملالہ یوسفزئی اور شبانی عظمی سمیت سو سے زائد مسلمان خواتین کی بھارتی ایپ پر نیلامی، دو افراد گرفتار

لندن (مونا بیگ) بھارتی مسلمان خواتین کے بعد مافیا نے پاکستان سمیت دیگر ممالک کی مسلم خواتین کو بھی اپنے اسکینڈل کا نشانہ بنانا شروع کردیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی پولیس نے ایک ایپ کے حوالے سے تحقیقات کا دائرہ وسیع کردیا ہے جس میں 100 سے زائد مسلم خواتین کی فہرست نیلامی کے لیے شامل ہے۔ ابتدائی طور پے دو ملزمان کو گرفتار بھی کرلیا گیا ہے جن کے نام وشال جہا اور شویتا سنگھ ہیں۔ مائیکروسافٹ کے سافٹ ویئرشیئرنگ پلیٹ فارم گِٹ حب پر بنائی جانے والی ‘بُلی بائی’ نامی اس ایپ میں مسلمان خواتین کو نیلامی کے لیے پیش کیے جانے پرخواتین کی ایک بڑی تعداد بالخصوص مسلمانوں نے آواز اٹھائی تھی۔

میڈیا کے مطابق سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے غم وغصے کے اظہاراورشکایات کےاندراج کے بعد ایپ بنانے والےصارف کومتعلقہ پلیٹ فارم سے بلاک کردیا گیا ہے۔ فہرست میں پاکستان سے تعلق رکھنے والی نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسفزئی اور ایوارڈ یافتہ بالی ووڈ اداکارہ شبانہ اعظمی کے نام بھی شامل ہیں۔ بھارت میں ایک سال سے بھی کم عرصے میں یہ دوسرا موقع ہے جب مسلم خواتین کی فروخت کے لیے آن لائن اشتہار دیا گیا، اس سے قبل جولائی 2021 میں بھی سُلی ڈیلزکے نام سے اسی نوعیت کی ایپ بنائی گئی تھی جہاں80 سے زائد معروف مسلم خواتین صحافیوں، رائٹرزاور انفلوئنسرز کے لیے ‘ڈیلزآف داڈے’ جیسے الفاظ استعمال کرتے ہوئے اُن کی نیلامی کی پیشکش کی گئی تھی۔

نئی ایپ بُلی بائی کے خلاف سب سے پہلی شکایت صحافی عصمت آرا نے درج کروائی جنہوں نے ایپ سے اپنے پروفائل کا ایک اسکرین شاٹ شیئر کیا۔ خاتون صحافی کا کہنا تھا کہ افسوسناک ہے کہ بحیثیت مسلمان عورت نئے سال کا آغاز ڈر اور نفرت کے احساس کے ساتھ کرنا پڑتا ہے۔ یقیناً سُلی ڈیلز کے اس نئے ورژن میں نشانہ بنائی جانے والی میں اکیلی نہیں ہوں۔ بالی ووڈ کی کئی مشہورشخصیات نے مسلم خواتین کی اس جعلی نیلامی پراپنےغم وغصے کا اظہارکیا ۔اداکارہ سوارا بھاسکر نے اپنی ٹویٹ میں لکھا، ‘ ہمیں خود کو یاد دلانا ہوگا کہ مسلمان خواتین کو آن لائن فروخت کرنا دُرست نہیں ہے، خود کو یاد دلائیں کہ ریلی نکالنا اور نسل کشی کا مطالبہ کرنا جائزنہیں نہ ہی لوگوں کی نماز میں خلل ڈالنا ٹھیک ہے۔ یہ ہمارے نام پر، ہمارے خداؤں کے نام پر ہورہا ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes