اکیلی عورت محفوظ نہیں ؟ موٹر وے زیادتی کیس کے حوالے سے شارٹ فلم ’’اب بس“ مقبول ہونے لگی – Kashmir Link London

اکیلی عورت محفوظ نہیں ؟ موٹر وے زیادتی کیس کے حوالے سے شارٹ فلم ’’اب بس“ مقبول ہونے لگی

لندن (مونا بیگ) موٹر وے زیادتی کیس نے ملک اور بیرون ملک رہنے والے پاکستانیوں کو کس طرح اپنی گرفت میں جکھڑے رکھا اسکا اندازہ تو میڈیا رپورٹس سے ہوگیا تھا تاہم اب اس حوالے سے ریلیز ہونے والی کم دورانیئے کی فلم ’’اب بس“ کی مقبولیت سے بھی پتہ چلتا ہے کہ لوگ عورتوں کیساتھ ہونے والے جبر کے ایشو کو بڑی سنجیدگی سے لینے لگے ہیں۔

لاہور موٹروے پر خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی کے واقعے پر مبنی شارٹ فلم ’’اب بس‘‘ میں دئیے گئے مضبوط پیغام نے لوگوں کو جذباتی کردیا ہے یہی وجہ ہے کہ چند ہی دنوں میں اسے ڈیڑھ لاکھ سے زائد لوگ دیکھ چکے ہیں۔

فلم میں صنم سعید نے مایا کا مرکزی کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے فلم میں ایک ایسی خاتون کا کردار ادا کیا ہے جسے کسی ایمرجنسی کی وجہ سے اپنی بیٹی کے ساتھ اکیلے رات میں سفر کے لیے نکلنا پڑتا ہے۔ لیکن سفر کے لیے نکلنے سے پہلے وہ اپنے تحفظ کے لیے کیا کیا تیاریاں کرتی ہیں یہی اس فلم کی اصل کہانی ہے۔
فلم کا دورانیہ 10 منٹ 24 سیکنڈ ہے جس میں صنم سعید نے مایا نامی لڑکی کا کردار ادا کیا ہے جس کے والد کو دل کا دورہ پڑتا ہے اور اسے ان کے پاس جانے کے لیے اکیلے سفر کرنا ہوتا ہے، اکیلے سفر کرنے سے پہلے وہ اپنی حفاظت کے لیے مختلف قسم کی چھریاں، بندوق اور دیگر چیزیں اپنے ساتھ رکھتی ہے۔

اس فلم کی ہدایت کاری محسن طلعت نے دی ہے جب کہ فلم کی ایگزیکٹو پروڈیوسر سیمین نویس ہیں اور اس کی کہانی شاہد ڈوگر نے لکھی ہے۔ فلم کے آخر میں نہایت مضبوط پیغام دیا گیا ہے’’ اکیلی عورت ذمہ داری ہوتی ہے موقع نہیں‘‘ اس پیغام کو لوگوں میں بے حد پسند کیا جارہا ہے اور لوگ ہدایت کار محسن طلعت کی کاوش کو بہت سراہ رہے ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes