کزن میرج کے حوالے سے نئی برطانوی تحقیق، سائینسدانوں نے مہلک نتائج سے آگاہی کردی – Kashmir Link London

کزن میرج کے حوالے سے نئی برطانوی تحقیق، سائینسدانوں نے مہلک نتائج سے آگاہی کردی

لندن (عمران راجہ) برطانوی سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں کزن میرج کے انتہائی سنگین نقصانات سے آگاہی دیتے ہوئے کہا ہے کہ قریبی رشتہ دار لڑکے لڑکی کی باہمی شادی سے ان کے ہاں پیدا ہونے والے بچے کئی طرح کی جینیاتی بیماریوں کا شکار ہوتے ہیں، پاکستان سمیت جن ممالک میں خاندانی نظام کی جڑیں مضبوط ہیں وہاں خاندان کے اندر شادیاں کرنے کا رجحان بہت زیادہ پایا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ان ممالک کے شہری جو برطانیہ و دیگر ممالک میں مقیم ہیں، ان کی بھی کوشش ہوتی ہے کہ ان کے بچوں کی شادیاں کزنز کے ساتھ ہی ہوں۔ تاہم اب برطانوی سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں کزن میرج کے انتہائی سنگین نقصانات بتا دیئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ قریبی رشتہ دار لڑکے لڑکی کی باہم شادی کرنے سے ان کے ہاں پیدا ہونے والے بچے کئی طرح کی جینیاتی بیماریوں کا شکار ہوتے ہیں۔ ان کے پیدائشی طور پر اندھا اور بہرا ہونے کا خطرہ بہت زیادہ ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ انہیں دوران خون اور دل کی بیماریاں لاحق ہونے، گردے فیل ہونے کا مسئلہ، پھیپھڑوں اور جگرکے مسائل اور دیگر بے شمار پیچیدہ ذہنی یا نفسیاتی عارضے لاحق ہونے کا خطرہ بھی زیادہ ہوتا ہے۔

سائنسدانوں نے اس تحقیق کے لیے جب ڈیٹا اکٹھا کیا تو معلوم ہوا کہ برطانیہ میں بسنے والے پاکستانی اور بنگلہ دیشی خاندانوں میں خواتین کے ہاں بچوں کی قبل از وقت پیدائش اور موت کی شرح بہت زیادہ تھی۔ اس کی وجہ کزن میرج تھی۔ اس ڈیٹا کے مطابق گزشتہ پانچ سال میں ایسے پاکستانی نژاد برطانوی میاں بیوی کے ہاں پیدا ہونے والے 545بچے موت کے منہ میں جا چکے ہیں جو آپس میں کزن تھے۔

تحقیقاتی ٹیم کے رکن ڈاکٹر پیٹر کورے کا کہناتھا کہ ”کزن میرج کو ترجیح دینے کی وجہ سے پاکستانی جوڑوں کے ہاں پیدا ہونے والے بچوں کو جینیاتی عارضے لاحق ہونے کا خطرہ دیگر برطانوی بچوں کی نسبت 13گنا زیادہ ہوتا ہے۔“ سائنسدان اس معاملے پر مزید تحقیق کر رہے ہیں، جس میں وہ کزن میرج کرنے والے مردوخواتین پر تجربات کریںگے۔ پاکستانی نژاد 40سالہ خاتون طاہرہ نقوی نے بھی اس تحقیق میں خود کو رضاکارانہ طور پر پیش کر رکھا ہے۔ طاہرہ نقوی کی بھی کزن میرج ہوئی تھی اور اس کا پہلا بیٹا قبل از وقت پیدا ہو کر موت کے منہ میں چلا گیا تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes